لندن: پارلیمان پر حملہ کرنے والے کی شناخت ظاہر

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption لندن میں حملہ آور کو ہلاک کر دیا گیا تھا

لندن کی میٹرو پولیٹن پولیس نے بدھ کو ایوان پارلیمان کے باہر ہونے والے دہشت گردی حملے میں ملوث شخص کی خالد مسعود کے نام سے شناخت کر لی ہے۔

٭لندن میں دہشت گردی، برمنگھم میں چھاپے اور گرفتاریاں

٭لندن میں دہشت گردی، پانچ افراد ہلاک اور 40 زخمی

٭’لندن حملہ آور کے بارے میں ایم آئی 5 کو معلوم تھا‘

٭لندن میں دہشتگردی کا واقعہ: حقائق کیا ہیں؟

پولیس کے مطابق مسعود جو اس حملے میں مارا گیا تھا اس کے خلاف فی الوقت کوئی تحقیقات نہیں ہورہی تھیں البتہ ماضی میں اسے کئی مرتبہ سزا ہو چکی تھی۔

مسعود کی عمر باون برس تھی اور وہ برطانیہ کی کاونٹی کینٹ میں پیدا ہوا تھا لیکن اس کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ ویسٹ مڈلینڈ میں رہائش پذیر تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ایسی کوئی اطلاع نہیں تھی کہ مسعود کوئی حملہ کرنے والا ہے یا ایسے کسی اقدام کا اس کا کوئی ارادہ ہے۔

لیکن ماضی میں اسے کئی مرتبہ سزا ہو چکی تھی اور اسی وجہ سے پولیس کے ریکارڈ میں اس کا نام تھا۔ اس کو غیر قانونی اسلحہ رکھنے اور نقص امن و عامہ میں ملوث ہونے پر سزا ہوئی تھی۔

اس کو پہلی مرتبہ نومبر 1983 میں سزا ہوئی تھی اور آخری مرتبہ سنہ 2003 میں اسے چاقو رکھنے کے جرم میں پکڑا گیا تھا۔

لیکن ماضی میں اسے کبھی دہشت گردی کے الزام میں سزا نہیں ہوئی تھی۔

پولیس نے برمنگھم اور لندن میں پانچ مردوں اور تین خواتین کو حراست میں لیا ہے جن کے بارے میں یہ شبہ ظاہر کیا گیا ہے کہ وہ ملک میں مزید حملوں کی تیاری کر رہے تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں