شمالی کوریا کا ایک اور کامیاب میزائل تجربہ

میزائل تصویر کے کاپی رائٹ EPA

جنوبی کوریا کی فوج نے کہا ہےکہ شمالی کوریا نے درمیانے فاصلے تک مار کرنے والےایک اور میزائل کا تجربہ کیا ہے۔

وائٹ ہاؤس نے کہا ہے اب کی بار شمالی کوریا نے جس میزائل کا تجربہ کیا ہے اس کی رینج پچھلے تین تجربوں میں استعمال ہونے والے میزائلوں سے کم تھی۔

شمالی کوریا نے ایک ہفتہ پہلے ایک ایسے نئے میزائل کا تجربہ کیا تھا جو اس کے بقول جوہری ہتھیار لے جانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

شمالی کوریا نے اتوار کے روز ایک بار اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ وہ اپنے میزائل تجربے جاری رکھے گا۔

گزشتہ سوموار کو ہی اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے شمالی کوریا سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ مزید میزائل تجربے کرنے سے باز رہے۔

جنوبی کوریا کے جوائنٹ چیفس آف سٹاف نے کہا کہ اتوار کو داغےجانے والے میزائل نے 500 کلو میٹر تک بحیرہ جاپان میں سفر کیا۔ اس سے پہلے شمالی کوریا نے جو تجربہ کیا تھا اس نے 700 کلو میٹر تک دور تک سفر کیا تھا۔

جاپان کے کابینہ کے چیف سیکرٹری یوشیدا سوگا نے ایک پریس کانفرنس کو بتایا کہ شمالی کوریا سے احتجاج کیا گیا ہے۔

شمالی کوریا نے حالیہ مہینوں میں کئی بار میزائل کے تجربات کیے ہیں اور چھٹا جوہری تجربہ کرنے کی بھی دھمکی دے رکھی ہے۔

حالیہ ہفتوں کے دوران شمالی کوریا اور امریکہ کے درمیان شدید بیان بازی کے بعد کوریائی جزیرہ نما میں کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے اور امریکہ نے تھاڈ نامی میزائل بھی جنوبی کوریا میں نصب کیے ہیں۔

خیال کیا جاتا ہے کہ شمالی کوریا کے پاس مختلف رینج کے 1000 میزائل ہیں جن میں طویل فاصلوں تک مار کرنے والے ایسے میزائل بھی شامل ہیں جو مستقبل میں امریکہ کو نشانہ بنانے کے قابل ہو سکیں گے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں