ڈونلڈ ٹرمپ ٹیپ: ٹی وی میزبان بلی بش معطل

بلی بش تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption بلی بش کا اپنے ردعمل میں کہنا تھا کہ وہ 'شرمندہ اور پشیمان' ہیں

امریکی ٹی وی میزمان بلی بش کو رپبلکن پارٹی کے صدارتی امیدوار ڈونلڈ‌ ٹرمپ کی ویڈیو ٹیپ منظرعام پر آنے کے بعد این بی سی کے پروگرام کی میزبانی سے معطل کر دیا گیا ہے۔

پروگرام 'ٹوڈے' کے ایگزیکٹیو نوا اوپنہیم نے صبح کے وقت نشر کیے جانے والے پروگرواموں کے عملے کو لکھا کہ 'ٹیپ میں بلی کی زبان اور رویے کی کوئی معافی نہیں ہے۔'

بلی بش کا اپنے ردعمل میں کہنا تھا کہ وہ 'شرمندہ اور پشیمان' ہیں۔

سنہ 2005 میں ریکارڈ ہونے والی اس ٹیپ میں امریکی صدارتی امیدوار ٹرمپ نے نازیبا گفتگو کی تھی جس پر انھوں نے معذرت بھی طلب کی ہے۔

اس ویڈیو میں ڈونلڈ ٹرمپ نے بلی بش کے ساتھ بات کرتے ہوئے خواتین کے بارے میں نازیبا زبان کا استعمال کیا تھا۔

میزبان سابق امریکی صدر جارج ڈبلیو بش کے قریبی رشتے بھی ہیں اور ان کا کہنا تھا کہ یہ سب کچھ 11 سال پہلے ہوا، اس وقت نوجوان تھے، کم تجربہ کار تھے اور انھوں نے بے وقوفانہ عمل کیا اور اس کے لیے وہ معافی مانگتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ڈونلڈ ٹرمپ نے ان باتوں کو 'خالی خولی الفاظ' اور 'لاکر روم میں ہونے والی گفتگو' قرار دیا

رپبلکن پارٹی کی سینیئر رہنماؤں کی جانب سے بھی ڈونلڈ‌ ٹرمپ کی گفتگو کو تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہے جبکہ ڈیموکریٹ امیدوار ہلیری کلنٹن نے اسے 'خوفناک' قرار دیا ہے۔

دوسری جانب ڈونلڈ ٹرمپ نے ان باتوں کو 'خالی خولی الفاظ' اور 'لاکر روم میں ہونے والی گفتگو' قرار دیا۔

خیال رہے کہ بلی بش کی پروگرام 'ٹوڈے' کی ٹیم میں شمولیت رواں سال اگست میں ہوئی تھی، اس سے قبل وہ سنہ 2009 سے پروگرام 'اکسس ہالی وڈ' کی میزبانی اور سنہ 2010 سے 'اکسس ہالی وڈ لائیو' کی مشترکہ طور پر میزبانی کر رہے تھے۔

نوا اوپنہیم کا کہنا تھا کہ وہ اس معاملے کو 'مزید جائزہ' لیں تھے اور اس بارے میں کچھ نہیں بتایا کہ بلی بش کتنے عرصے کے لیے معطل رہیں گے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں