ڈونلڈ ٹرمپ کے بارے میں فلموں اور گانوں میں پیشن گوئیاں

تصویر کے کاپی رائٹ 20TH CENTURY FOX

ڈونلڈ ٹرمپ کے امریکی صدر منتخب ہونے سے کئی عرصہ قبل ہی فلموں، ٹیلی وژن اور موسیقی میں ان کے امریکہ کے صدر بننے کے امکانات کے بارے میں بات ہوتی رہی ہے۔

امریکہ کے 45 صدر کے طور پر ڈونلڈ ٹرمپ کے انتخاب کے بارے میں امریکی مشہور کارٹون سیریز سمپسنز کے مداحوں کو پرانی قسط ضرور یاد آگئی ہوگی جس میں ان کے امریکی صدر بننے کی پیشن گوئی کی گئی تھی۔

16 سال قبل 2000 میں نشر ہونی والی قسط میں جس کا ٹائٹل 'بارٹ ٹو دی فیوچر' تھا، میں دکھایا گیا تھا کہ بارٹ جو مستقبل قریب کا سفر کرتا ہے، جہاں اس کی بہن لیزا امریکہ کی پہلی خاتون صدر منتخب ہوتی ہے۔

لیزا کو اپنے دفتر میں ساتھیوں کے ساتھ ملاقات کے دوران بریفننگ میں انھیں بتایا جاتا ہے کہ ’امریکہ کا دیوالیہ نکل گیا ہے جس کی وجہ ان سے پہلے کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ تھے۔‘

جس پر وہ اپنے وزیر داخلہ جو کہ ان کے بچپن کے دوست مائل ہاؤس وین ہیوٹن ہوتے ہیں سے سوال کرتی ہیں کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی مدت اقتدار میں ملک کی معیشت کے کیا حالات رہے ہیں جس پر وہ جواب دیتے ہیں کہ ’ہم ٹوٹ چکے ہیں۔‘

رواں سال کے آغاز میں سمپسنز کے مصنف ڈین گرینی نے اس 16 سال قبل کی قسط کو ’امریکہ کے لیے وارننگ‘ قرار دیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ SONY MUSIC

انھوں نے ہالی وڈ رپورٹر کو بتایا کہ ’یہ ایسا تھا جیسے بالکل نیچے جانے سے قبل آخری سٹاپ ہو۔ یہ امریکہ کو بیوقوفی کی جانب لے جانے والی سوچ کے ساتھ مسلسل ہوگیا۔‘

ان کہنا تھا کہ ’ہمیں لیزا کے لیے بہت سے مسائل چاہیے تھے، کہ سب کچھ اتنا برا ہو چکا ہے جتنا ممکنہ طور پر ہو سکتا تھا۔ اس لیے ہم نے لیزا سے قبل ڈونلڈ ٹرمپ کو پہلے صدر دکھایا۔‘

صرف سمپسنز کی ٹیم ہی نہیں جس نے ڈونلڈ ٹرمپ کے صدر بننے کی پیشن گوئی کی بلکہ 1999 میں امریکی راک بینڈ ریج اگینسٹ دا مشین نے ایک میوزک ویڈیو میں ڈونلڈ ٹرمپ کے وہائٹ ہاؤس کی دوڑ میں شامل ہونے کا اشارہ کیا تھا۔

’سلیپ ناؤ ان دا فائر‘ گانے کی اس ویڈیو میں ایک شخص کو ہاتھ میں ایک بینر اٹھائے دیکھا جا سکتا ہے جس پر لکھا ہے: ’صدارت کے لیے ڈونلڈ جے ٹرمپ‘۔

اس میوزک ویڈیو کو ڈاکیومینٹر فلمیں بنانے والے مائیکل مور نے بنایا تھا۔ مائیکل مور جو کہ بائیں بازو کے سیاسی مبصر کے طور پر جان جاتے ہیں رواں سال کے آغاز میں ’ٹرمپ لینڈ‘ کے نام سے فلم بھی ریلیز کر چکے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AF ARCHIVE / ALAMY STOCK PHOTO

اس فلم میں انھوں نے ڈونلڈ ٹرمپ کے بطور صدر انتخاب کے نتیجے میں خطرات سے آگاہ کیا تھا۔

ڈونلڈ ٹرمپ کے مستقبل میں صدر بننے کا ہلکا سا اشارہ فلم ’بیک ٹو دا فیوچر‘ میں بھی دیکھایا گیا ہے۔

فلم کے ولن بف ٹینن ایک کامیاب کاروباری شخصیت بن جاتے ہیں جس کے بعد وہ ایک 27 منزلہ کسینو بناتے ہیں اور اپنے پیسے کو امریکی سیاست پر اثرانداز ہونے کے لیے استعمال کرتے ہیں۔

مداحوں کے خیال میں یہ فلم ڈونلڈ ٹرمپ پر بننی تھی اور اس خیال کی فلم کے مصنف نے گذشتہ سال تصدیق بھی کی۔

ٹرمپ اور ٹینن میں مشترکہ باتوں کے بارے میں جب باب گیل سے پوچھا گیا تو انھوں نے ڈیلی بیسٹ کو بتایا کہ ’ہم نے فلم بناتے ہوئے اس بارے میں سوچا تھا۔‘

ڈونلڈ ٹرمپ بیک ٹو دا فیوچر پارٹ 2 کے 27 سال بعد امریکہ کے صدر منتخب ہوئے ہیں۔

اسی بارے میں