ڈھاکہ میں بھی ترک ڈراموں کے خلاف احتجاج

سلطان سلیمان تصویر کے کاپی رائٹ Deepto TV
Image caption سلطان سلیمان نامی ترکی ڈراما بنگلہ دیش میں مقبولیت کے نئے ریکارڈ قائم کر رہا ہے

بدھ کے روز بنگلہ دیش کے شہر ڈھاکہ میں ٹیلی ویژن کے مقامی فنکاروں کی بڑی تعداد نے ایک احتجاجی مظاہرے میں شرکت کر کے ملکی چینلوں پر دکھائے جانے والے غیر ملکی ڈراموں پر پابندی کا مطالبہ کیا ہے۔

ان کا کہنا ہے بنگلہ دیشی ٹیلی ویژن چینلوں پر غیر ملکی ڈرامے دکھائے جا رہے ہیں جس کی وجہ سے ملکی فنکاروں کی مانگ میں کمی واقع ہو گئی ہے۔

ڈھاکہ میں بی بی سی بنگلہ کے نامہ نگار اکبر حسین کے مطابق فنکاروں نے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت ان چینلوں کے خلاف کارروائی کرے اور بغیر قواعد و ضوابط کے دکھائے جانے والے پروگراموں پر پابندی عائد کی جائے۔

ان دنوں بنگلہ دیش میں 'سلطان سلیمان' نامی ایک ڈراما مقبولیت کی بلندیاں چھو رہا ہے، اور جس وقت یہ ڈراما دکھایا جاتا ہے، ناظرین دوسرے چینلوں پر نشر کردہ پروگراموں کو نظر انداز کر دیتے ہیں۔

اس ڈرامے کی مقبولیت کے پیشِ نظر کئی دوسرے چینلوں نے بھی ترکی ڈرامے بنگالی زبان میں ڈب کر کے دکھانے شروع کر دیے ہیں۔

اکبر حسین کہتے ہیں کہ اس کے علاوہ فنکاروں نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ بنگلہ دیشی چینلوں پر انڈین مواد کی بھی بھرمار ہے جس کی وجہ سے مقامی فنکار متاثر ہو رہے ہیں۔

یاد رہے کہ پاکستان میں بھی ترکی ڈرامے خاصے مقبول رہے ہیں۔ خاص طور پر 'میرا سلطان' کو خاصی پذیرائی ملی تھی۔

اس ڈرامے پر پاکستان میں بھی احتجاج کیا گیا تھا۔

اسی بارے میں