ٹرمپ کا ’پرامن‘ اور ’ذہین‘ جواب دینا ہوگا: لیڈی گاگا

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption سماجی ترقی کے بغیر سیاسی ترقی نہیں ہو سکتی۔: لیڈی گاگا

امریکی پاپ فنکارہ لیڈی گاگا نے اپیل کی ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی صدارت کا ’پرامن‘ اور ’ذہین‘ جواب دیا جانا چاہیے۔

ڈونلڈ ٹرمپ کی مجوزہ کابینہ میں کچھ قدامت پسند افراد ہیں جو کہ ہم جنس پرستوں کے حقوق کی محآلفت کرتے ہیں اور لیڈی گاگا کا کہنا ہے کہ وہ ہم جنس پرست برادری کے حقوق کے حوالے سے کی گئی پیش رفت کی حفاظت کے لیے کوشاں رہیں گی۔

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ’گذشتہ آٹھ سالوں میں ہونے والی سماجی ترقی کی حفاظت کرنے کے لیے ہم جو کچھ کر سکیں گے، کریں گے۔‘

انھوں نے کہا ’سماجی ترقی کے بغیر سیاسی ترقی نہیں ہو سکتی۔‘

’آپ بہت ساری نوکریاں پیدا کر لیں، آپ نئی پالیسی بنا لیں، مگر یہ سب کچھ تب تک کام نہیں کرے گا جب تک لوگ ایک دوسرے کو پسند نہیں کریں گے، ایک دوسرے کے ساتھ رحم دل رویہ اختیار نہیں کریں گے۔‘

اگرچہ ڈونلڈ ٹرمپ نے خود کو ہم جنس پرست برادری کا اُچھا دوست قرار دیا ہے تاہم ان کی مجوزہ کابینہ کے کچھ اراکین کے حوالے سے برادری میں شدید تشویش پائی جاتی ہے۔

نومنتخب نائب صدر مائک پینس نے اپنے کیریئر کے آغاز میں ہم جنس شادیوں کی مخالفت کی اور حکومت کی جانب سے ہم جنس پرستوں کے لیے ایچ آئی وی کے علاج کے لیے مختص رقم کو ہم جنس پرستوں کی ’کنورژن تھراپی‘ یعنی تبدیلی کے لیے مختص کرنے کی بظاہر حمایت کی۔ حال ہی میں ان کے ترجمان نے اس بات سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ مائیک پینس نے اس عمل کی نہ حمایت کی نہ مخالفت۔

حال ہی میں مائیک پینس نے متنازع بل ’ریلیجس فریڈم ریسٹوریشن ایکٹ‘ کی منظوری دی۔ اس بل کے تحت کی بھی نجی کاروبار کو یہ حق حاصل ہے کہ وہ کسی گاہک کے مذہبی عقائد کی بنا پر اسے سروس نہ فراہم کریں۔

تاہم قومی سھح پر دباؤ کے باعث انھوں نے بعد میں اس بل میں ترمیم کی کہ اس قانون کے تحت ہم جنس پرست برادری کے ساتھ امتیازی سلوک نہیں کیا جا سکتا۔ قدامت پسندوں نے اس ترمیم کی وجہ سے ان پر شدید تنقید بھی کی۔

مائیک پنس کے علاوہ جیف سیشنز کے بطور اٹارنی جنرل نامزد ہونے پر بھی لوگوں میں بے چینی پائی جاتی ہے۔ ایلاباما سے تعلق رکھنے والے سینیٹر نے ہم جنس پرستوں کے فوج میں نوکری کرنے کی مخالفت کی تھی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں