نامور مصنفہ بانو قدسیہ انتقال کر گئیں

بانو قدسیہ
Image caption بانو قدسیہ مشرقی پنجاب کے ضلع فیروزپور میں 28 نومبر میں 1928 کو پیدا ہوئی تھیں

اردو کی مقبول و معروف ناول نگار اور افسانہ نگار بانو قدسیہ لاہور میں انتقال کر گئی ہیں۔ ان کی عمر 88 برس تھی۔

گورنر پنجاب ان کی وفات پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ادب کی دنیا میں بانو قدسیہ کا نام ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔

میڈیا پر چلنے والی اطلاعات کے مطابق وہ گذشتہ چند روز سے علیل تھیں۔

بانو قدسیہ مشرقی پنجاب کے ضلع فیروزپور میں 28 نومبر میں 1928 کو پیدا ہوئی تھیں۔ انھوں نے کنیئرڈ کالج اور گورنمنٹ کالج سے تعلیم حاصل کی۔ وہ مشہور ادیب اشفاق احمد کی اہلیہ تھیں۔

بانو قدسیہ نے 1981 میں ’راجہ گدھ‘ لکھا جس کا شمار اردو کے مقبول ترین ناولوں میں ہوتا ہے۔ ان کی کل تصانیف کی تعداد دو درجن سے زیادہ ہے اور ان میں ناول، افسانے، مضامین اور سوانح شامل ہیں۔ انھوں نے اردو کے علاوہ پنجابی زبان میں بھی لکھا۔

انھوں نے پاکستان ٹیلی ویژن کے لیے متعدد ڈرامے لکھے جنھیں بہت مقبولیت حاصل ہوئی۔

بانو قدسیہ کو ان کی ادبی خدمات کے عوض تمغۂ امتیاز سے نوازا گیا۔

Image caption بانو قدسیہ کی عمر 88 برس تھی