کون جیتے گا آسکر؟

اتوار کی رات کو آسکر ایوارڈ کی تقریب منعقد ہو رہی ہے۔ دنیا بھر کے شائقین بے صبری سے انتظار کر رہے ہیں کہ اس رات سنہری مجسمہ کس کس کے نصیب میں آئے گا۔

بہترین فلم

تصویر کے کاپی رائٹ Lionsgate

پیش پیش: لا لا لینڈ

لا لا لینڈ کو ریکارڈ 14 نامزدگیاں مل چکی ہیں، اس لیے توقع ہے کہ یہ فلم بہترین فلم کا اعزاز بھی اپنے نام کر لے گی۔ یہ کلاسیکی بھی ہے اور جدید بھی۔ یہ کسی بھی نئی فلم سے مختلف ہے، لیکن پھر بھی اچھی لگتی ہے۔ یہ فلم دکھ، ناکامی اور کامیابی کے بارے میں ہے۔ یہ سب آسکر کا سنہری تمغہ جیتنے کے نسخے ہیں۔

چیلنجر: مون لائٹ

خوبصورتی سے فلمائی ہوئی خوبصورت کہانی۔ اس فلم میں وہ مرکزی کردار ہے جو ہالی وڈ میں شاذ و نادر ہی پایا جاتا ہے۔ یہ کردار ایک ساتھ بہت کچھ ہے: غریب، نوجوان، ہم جنس پرست، سیاہ فام، دیوار سے لگا ہوا۔

ممکنہ: ہڈن فگرز

1960 کی دہائی کے ناسا میں سفید مردوں کے غلبے والے ماحول میں تین سیاہ فام خواتین ماہرینِ ریاضی کی کہانی۔ باکس آفس پر اس فلم نے توقع سے بڑھ کر کامیابی حاصل کی ہے۔

بہترین اداکارہ

تصویر کے کاپی رائٹ PA

پیش پیش: ایما سٹون (لا لا لینڈ)

لا لا لینڈ کی لہر اتنی بلند ہے کہ وہ اپنے ساتھ ایما سٹون کو بھی اوپر اٹھا سکتی ہے۔ ان کی عمر اور کریئر بھی اس منزل پر ہیں جہاں ہالی وڈ کے کرتا دھرتاؤں کو اداکاراؤں کی خدمات کا اعتراف کرتے ہی بنتی ہے۔

چیلنجر: ازابل ہوپرٹ (ایل)

فرانسیسی اداکارہ ریپ کے انتقام پر مبنی اس سنسنی خیز فلم میں اپنی اداکاری پر گولڈن گلوب ایوارڈ جیت چکی ہیں، اور کوئی تعجب نہیں ہو گا اگر وہ آسکر بھی اپنے نام کر لیں۔

ممکنہ: نیٹلی پورٹمین (جیکی)

جیکی میں پورٹمین نے سابق خاتونِ اول جیکی کینیڈی کا کردار ادا کیا ہے اور خوبی سے کیا ہے۔ تاہم یہ فلم باکس آفس پر کچھ زیادہ چمتکار نہیں دکھا پائی۔

بہترین اداکار

تصویر کے کاپی رائٹ Paramount

پیش پیش: ڈینزل واشنگٹن (فینسز)

ڈینزل اس دوڑ میں ممکنہ طور پر دوسروں کے مقابلے سرِفہرست ہیں۔ اگر وہ کامیاب ہو گئے تو اداکاری کے لیے تین آسکر ایوارڈ جیتنے والے وہ چوتھے مرد اداکار ہوں گے اور گذشتہ 25 برسوں میں وہ سب سے زیادہ عمر کے جیتنے والے معمر ترین اداکار بھی بن جائیں گے۔

چیلنجر: کیسی ایفلیک (مانچسٹر بائی دا سی)

ایفلیک اور واشنگٹن میں سخت مقابلہ درپیش ہے۔ ایفلیک نے مانچسٹر بائی دا سی میں زبردست المیہ اداکاری کی ہے، تاہم ان پر 2010 میں ہونے والے جنسی ہراسانی کے ایک واقعے کے سائے منڈلا رہے ہیں جن سے ان کے امکانات متاثر ہو سکتے ہیں۔

ممکنہ: رائن گاسلنگ (لا لا لینڈ)

اگر رائن گاسلنگ نے بہترین اداکار کا ایوارڈ اپنے نام کر لیا تو لا لا لینڈ ہر چیز کو بہا لے جائے گی۔

بہترین ہدایت کار

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

سرِفہرست: ڈیمیئن چیزل (لا لا لینڈ)

لا لا لینڈ اس قدر عمدہ فلم ہے کہ اکیڈمی چیزل کے تخیئل، جرات اور ہمت کو ضرور داد دنیا چاہے گی۔ پھر یہ بھی ہے کہ انھوں نے صرف 32 برس کی عمر میں ایسی فلم بنا ڈالی ہے۔ اگر چیزل جیت گئے تو وہ ہالی وڈ کی تاریخ کے کم عمر ترین آسکر انعام یافتہ ہدایت کار ہوں گے۔

چیلنجر: بیری جینکنز (مون لائٹ)

لا لا لینڈ کا کرشمہ اپنی جگہ لیکن مون لائٹ میں بیری جینکنز نے بھی زبردست فنی چابکدستی کا ثبوت دیا ہے، اور انھیں ہالی وڈ کا شاندار نیا ٹیلنٹ قرار دیا جا رہا ہے۔ اگر اکیڈمی نے ان کے حق میں ووٹ دیا تو وہ یہ اعزاز پانے والے پہلے سیاہ فام ہدایت کار ہوں گے۔

مقابلے میں شامل: میل گبسن (ہیک سا رِج)

تصویر کے کاپی رائٹ AMPAS

گبسن کی شخصیت بہت سے تنازعات میں گھری ہوئی ہے، اور ان پر یہود دشمنی اور خواتین دشمنی کے الزامات لگتے رہے ہیں، اس لیے بظاہر انھیں یہ اعزاز ملنا مشکل نظر آتا ہے۔ تاہم 2003 میں رومن پولانسکی کو اسی قسم کے تنازعات کے باجود آسکر مل گیا تھا۔ اس لیے کون جانے!

لا لا لینڈ کتنے آسکر جیتے گی؟

یہ جادوئی میوزیکل فلم پہلے ہی 14 نامزدگیوں کے ساتھ ریکارڈ بک میں شامل ہو گئی ہے، جن میں دو گانوں کی نامزدگیاں شامل ہیں۔ اس کا مطلب ہے کہ اسے زیادہ سے زیادہ 13 آسکر مل سکتے ہیں۔

اب تک سب سے زیادہ آسکر جیتنے کا اعزاز ٹائٹینک، لارڈ آف دا رنگز اور بین حر کے پاس ہے جنھوں نے 11، 11 طلائی مجسمے اپنے نام کیے تھے۔

کسی میوزیکل کی جانب سے سب سے زیادہ آسکر جیتنے کا ریکارڈ ویسٹ سائیڈ سٹوری کے پاس ہے جس نے دس ایوارڈ جیتے تھے۔

لا لا لینڈ بوری بھر کر اعزازات لے جائے گی، تاہم بظاہر اس کا ریکارڈ توڑنا مشکل نظر آتا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں