ووگ عربیہ کے پہلے شمارے پر جیجی حدید

ماڈل جیجی حدید تصویر کے کاپی رائٹ VOGUE

فیشن کے معروف میگزین ووگ نے اس ماہ اپنے عربی ایڈیشن کا آغاز کیا ہے جس کے پہلے شمارے کے سرِ ورق پر ماڈل جیجی حدید کی تصویر شائع کی گئی ہے۔

جیجی حدید نے انسٹاگرام پر لکھا ہے کہ' میرے خیال میں وہاں ووگ کے وہاں آنے کی خوبصورت بات فیشن انڈسٹری کے طور پر یہ ہے کہ ہم جشن منا سکتے ہیں اور مختلف ثقافتوں کو دنیا کے ساتھ شیئر کر سکتے ہیں۔'

جیجی حدید کی والدہ ڈچ نژاد امریکی شہری جبکہ والد فلسطینی نژاد ہیں۔

ووگ کے ناشر نے سعودی شہزادی الجہان عبدالعزیز کو عربی ایڈیشن کا مدیر اعلیٰ مقرر کیا ہے۔

شہزادی الجہان عبدالعزیز کا کہنا ہے کہ ایک تصویر میں جیجی اس خطے کے بارے میں ہزاروں الفاظ بیان کرتی دکھائی دیتی ہیں جہاں پر اس کا ایک طویل عرصے سے انتظار تھا۔

ووگ عربیہ کو عربی کے علاوہ انگلش میں شائع کیا گیا ہے اور دونوں پر جیجی کی حجاب میں دو مختلف تصاویر شائع کی گئی ہیں۔

جیجی کی دو مختلف تصاویر کے استعمال کے فیصلے پر حوصلہ افزا ردعمل سامنے آیا ہے لیکن انسٹا گرام کے صارفین نے پبلشر پر زور دیا ہے کہ وہ مستقبل میں آنے والے شماروں میں عربی ماڈلز کو استعمال کریں۔

ووگ عربیہ کے اکاؤنٹ پر ایک صارف نے لکھا ہے کہ' بہت ہی شاندار تصویر، اگرچہ میری خواہش تھی کہ عربی ماڈل کو استعمال کیا جاتا۔ وہ لڑکیاں بہت ہی خوبصورت ہیں۔'

ایک اور صارف نے لکھا کہ 'اس کا ایک طویل عرصے سے انتظار تھا۔ ہو سکتا ہے کہ آپ عرب ماڈلز کو موقع دیں جیسا کہ ہارپر بازار نے کیا تھا۔‘

اسی بارے میں