خواجہ سرا ہونا کوئی گالی نہیں
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

’خواجہ سرا ہونا کوئی گالی نہیں ہے‘

کامی سڈ پاکستان کی پہلی ٹرانس جینڈر ماڈل اور سماجی کارکن سمجھی جاتی ہیں۔ چند مہینے قبل ان کا ایک فوٹو شوٹ شائع ہوا جو پاکستان میں نہیں بلکہ دنیا بھر کے اخباروں میں بھی نظر آیا اور اب کامی نے اداکاری کے میدان میں بھی قدم رکھ لیا ہے۔

اپنی پہلی فلم ’رانی‘ میں کامی ایک ٹرانس جینڈر کردار میں نظر آتی ہیں جو ایک بچہ گود لے لیتی ہے۔ کامی کے فیشن شوٹ تو بہت گلیمرس ہوتے ہیں لیکن فلم کی کہانی میں وہ سادہ کردار میں نظر آتی ہیں۔

ہماری ساتھی فیفی ہاروں نے کامی سڈ سے کراچی میں ملاقات کی اور ان کی زندگی اور کیریئر کے پہلوؤں پر گفتگو کی۔