’فلم چھوڑ سکتا ہوں، پگڑی نہیں‘

دلجیت سنگھ تصویر کے کاپی رائٹ PHANTOM FILMS
Image caption اب تک اداکار دلجیت 'لاین آف پنجاب'، 'جنھیں میرا دل لٹيا' اور 'جٹ اینڈ جولیٹ' جیسی فلموں میں نظر آ چکے ہیں

حال میں ریلیز ہونے والی بالی وڈ فلم 'پھلوري' میں انوشکا شرما کے ساتھ اپنی اداکاری کا جوہر دکھانے والے پنجابی اداکار دلجيت دوسانجھ کا کہنا ہے کہ وہ فلم چھوڑ سکتے ہیں لیکن پگڑی نہیں۔

دلجيت دوسانجھ نے فلم 'اڑتا پنجاب' سے ہندی فلموں میں قدم رکھا۔ اس فلم میں اداکارہ عالیہ بھٹ اور شاہد کپور نے اہم کردار ادا کیے ہیں۔

دلجيت نے بتایا کہ ایک بار ایک فلمساڑ نے انہیں کہا تھا کہ پگڑی والے آرٹسٹ کامیاب نہیں ہوتے۔

دلجيت نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا: ’میری پہلی فلم بری طرح ناکام رہی تو فلمساز نے کہا کہ بیٹا پگڑی والے اداکار نہیں چلتے۔ تجھے لوگ پسند نہیں کریں گے۔ میں نے سوچا اگر ایسا ہے تو کوئی بات نہیں، میں فلم نہیں کروں گا۔ لیکن پھر جب میری دوسری فلم آئی تو وہ زبردست ہٹ ہوئی، اور اس طرح فلمساز کی بات غلط ثابت ہوگئی۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Phillauri
Image caption پنجابی اداکار دلجیت دوسانجھ اور انوشکا شرما کو فلم پھلوری کے ایک سین میں دیکھا جا سکتا ہے

دلجيت نے کہا: ’جب پہلی جنگ عظیم ہوئی تھی اس وقت بھی کچھ سردار فوجیوں کہا گیا تھا کہ توپ چلانے کے لیے آپ کو پگڑی اتارنی پڑے گی، تو انھوں نے کہا تھا کہ جان دیں گے لیکن پگڑی نہیں اتاریں گے۔ میں ایک رول کے لیے خود کو نہیں بدلوں گا۔ کام ملے نہ ملے، فلموں کے لیے پگڑی پہننا نہیں چھوڑ سکتا۔‘

اب تک وہ ’لاین آف پنجاب‘، ’جنھیں میرا دل لٹيا‘ اور ’جٹ اینڈ جولیٹ‘ جیسی فلموں میں نظر آ چکے ہیں۔

دلجيت گلوکار بھی ہیں۔ یو یو ہنی سنگھ کے ساتھ بھی یہ بہت سے گیت گا چکے ہیں۔ فلم 'اڑتا پنجاب' کے گیت 'اک کڑی' کو دلجيت نے ہی آواز دی ہے۔ 'پٹیالہ پیگ' اور 'پنگا' ان وہ گیت ہیں جو بہت مقبول ہوئے ہیں۔

انوشکا کے ساتھ کام کرنے کا تجربہ ان کے لیے بہت اچھا رہا۔ وہ کہتے ہیں: انوشکا ایک شاندار اداکارہ ہیں۔ میں بھی ایک پروڈکشن کمپنی کھولنا چاہتا ہوں، لیکن وہ تو ابھی سے فلم ساز بن گئی ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں