کیا بالی وڈ بدل رہا ہے؟

شبانہ اعظمی تصویر کے کاپی رائٹ Bollywood

بالی وڈ کی منجھی ہوئی اداکارہ اور سماجی کارکن شبانہ اعظمی کا کہنا ہے کہ آج کل جس طرح عورتوں کے مرکزی کردار والی فلمیں بنائی جا رہی ہیں وہ قابلِ ستائش ہے۔

شبانہ نے ودیا بالن، دپیکا پاڈوکون اور کنگنا رناوت جیسی اداکاراؤں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کی ہیروئنز خواتین کو با اختیار بنانے میں اہم کردار ادا کر رہی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Star

شبانہ اعظمی خود اپنے دور کی ان چند ہیروئنز میں سے ایک ہیں جنھوں نے یہ کام تین سے چار دہائی قبل کیا تھا۔ شبانہ 'انکور،' ’ارتھ،‘ ’فائر‘ اور ’گاڈ مدر‘ جیسی یادگار فلموں کا حصہ رہی ہیں۔ لیکن آج حالات کافی تبدیل ہو چکے ہیں، ایک زمانہ تھا جب ہیروئن کی عمر اور شادی ہی فلم میں اس کا کردار طے کیا کرتے تھے اور وہ بھی ایسا کردار جو ہیرو کی محض پرچھائیں ہوا کرتا تھا۔ اور شادی کے بعد انھیں ماں یا بھابی کے کردار آفر ہوا کرتے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ UNIVERSAL PR
Image caption ہیروئنز فلم میں کردار اور کمائی کے حساب سے بھی ہیروز سے کم نہیں ہیں

آج یہ رجحان بدل چکا ہے جس کی مثال دپیکا، پرینکا، کرینہ اور کاجول جیسی کئی ہیروئنز ہیں جو نہ صرف اپنی شرائط پر کام کرتی ہیں بلکہ فلم میں کردار اور کمائی کے حساب سے بھی ہیروز سے کم نہیں۔ اور جیسا شبانہ اعظمی نے کہا کہ فلمیں معاشرے میں آنے والی تبدیلیوں کی عکاسی کرتی ہیں یہی وجہ ہے کہ عورتوں کے مرکزی کردار والی فلمیں نہ صرف بنائی جا رہی ہیں بلکہ معاشرے میں پسند بھی کی جا رہی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption نئی دور کی اداکارائیں اپنی پسند کا کام کرتی ہیں

ایسی ہی ایک فلم 'لِپ سٹک انڈر مائی برقع‘ ہے۔ فلم پر انڈیا میں تو کافی ہنگامہ ہے اور سنسر بورڈ نے بھی فلم پر اعتراض کرتے ہوئے اسے ہری جھنڈی دکھانے سے انکار کر دیا۔ بورڈ کا کہنا ہے کہ فلم میں جنسی مناظر اور نازیبا گفتگو ہے جو عام نمائش کے لیے مناسب نہیں لیکن ملک سے باہر یہ فلم مختلف فلمی میلوں کی زینت بن رہی ہے۔ فلم ممبئی اور ٹوکیو فلمی میلے میں نمائش کے لیے پیش کی جا چکی ہے اور نیویارک انڈین فلمی میلے میں بھی دکھائی جانے والی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ JIGNESH PANCHAL
Image caption لپ سٹک انڈر برقع فلم میں عورتوں کے جنسی تخیل اور ان کے جنسی جذبات کی عکاسی کرنے کی کوشش کی گئی ہے

النکریتا سری واستو کی اس فلم میں عورتوں کے جنسی تخیل اور ان کے جنسی جذبات کی عکاسی کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ فلم میں کونکنا سین اور رتنا پاٹھک اہم کردار میں ہیں۔ پرکاش جھا کے پروڈکشن میں بننے والی اس فلم کی ہدایت کار النکریتا کا کہنا ہے کہ وہ فلم کی ریلیز کے لیے اپنی لڑائی جاری رکھیں گی۔

اب دیکھتے ہیں کہ کیا معاشرے اور بالی ووڈ میں آنے والی تبدیلی کا اثر ملک کے سنسر بورڈ پر بھی پڑے گا یا نہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ HOMI ADAJANIA
Image caption دپیکا اس وقت سنجے لیلا بھنسالی کی فلم پدما وتی کی شوٹنگ میں مصروف ہیں فلم میں ان کے ساتھ رنویر سنگھ بھی ہیں

دپیکا پادوکون ان چند اداکاراؤں میں سے ایک ہیں جن کی پروفیشنل اور ذاتی زندگی ہمیشہ سے ہی لوگوں کا دلچسپی کا سبب بنی رہتی ہے۔ آج کل پھر سے ایسی افواہیں گردش کر رہی ہیں کہ دپیکا اور ان کے مبینہ بوائے فرینڈ رنویر سنگھ کے درمیان حالات ناساز ہیں اور دونوں کا بریک اپ ہو گیا ہے۔ وجہ صرف اتنی ہے کہ دونوں ایک دوسرے کے ساتھ نظر نہیں آ رہے اور پارٹیوں میں بھی الگ الگ جاتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter
Image caption فلم پدما وتی کافی متنازع بنتی جا رہی ہے

دپیکا اس وقت سنجے لیلا بھنسالی کی فلم پدما وتی کی شوٹنگ میں مصروف ہیں فلم میں ان کے ساتھ رنویر سنگھ بھی ہیں اور یہ فلم کافی متنازع بنتی جا رہی ہے۔ کہا جا رہا ہے کہ سننجے لیلا بھنسالی نے ان دونوں کو مشورہ دیا ہے کہ فلم ریلیز ہونے تک وہ پبلک میں ساتھ نظر نہ آئیں۔

اب میڈیا اور سوشل میڈیا نے ان کے مبینہ عشق کو مبینہ بریک اپ میں تبدیل کر دیا۔ بہرحال جب تک فلم ریلیز نہیں ہو گی تب تک ان دونوں کے بارے میں اس طرح کی خبریں اور افواہیں گردش کرتی رہیں گی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں