سیلویسٹر سٹالون کا ’لالچی فلم سٹوڈیو‘ کے خلاف مقدمہ دائر کرنے کا فیصلہ

سیلویسٹر سٹالون تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

ہالی وڈ میں ایکشن فلموں کے معروف اداکار سیلویسٹر سٹالون وارنر برادرز سٹوڈیو کے خلاف ہرجانے کا مقدمہ دائر کر رہے ہیں۔

سیلویسٹر سٹالون کے مطابق وہ سنہ 1993 میں ریلیز ہونے والی فلم 'ڈیمولیشن مین' کے منافع کے حصہ دار ہیں۔

سلمان خان اور سلویسٹر سٹالن ایک دوسرے کے مداح

ان کا کہنا ہے 'ڈیمولیشن مین' نے باکس آفس پر کم سے کم 125 ملین ڈالر کمائے اور وارنر برادرز سٹوڈیو کے ساتھ ہونے والے معاہدے کے تحت وہ اس میں سے 15 فیصد کے حصہ دار ہیں۔

سیلویسٹر سٹالون کے وکلا کا کہنا ہے 'موشن پکچر سٹوڈیوز معروف لالچی ہیں' اور وارنر برادرز گذشتہ کئی سالوں سے ان کے پیسے پر بغیر کسی جواز کے بیٹھے ہیں۔'

دوسری جانب وارنر برادرز نے اس حوالے سے کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔

سیلویسٹر سٹالون کے قانونی دستاویزات کے مطابق ان کے نمائندوں نے سنہ 2014 میں وارنر برادرز کے ساتھ اس معاملے کو اٹھایا تاہم انھیں بتایا گیا کہ فلم کمپنی نے سٹالون کو کوئی رقم ادا نہیں کرنی کیونکہ فلم 'ڈیمولیشن مین'کو 66.9 ملین ڈالرز کا نقصان ہوا تھا۔

سٹالون کی جانب سے اس بارے میں بار بار پوچھنے پر فلم سٹوڈیو نے اپریل سنہ 2015 میں انھیں 2.8 ملین ڈالر کا چیک بھیج دیا تھا۔

ہرجانے کی دستاویزات کے مطابق 'وارنر برادرز سٹالون کی کمپنی روگ ماربل کے پیسوں پر گذشتہ کئی برسوں بغیر کسی جواز کے بیٹھی ہوئی ہے۔'

لاس اینجلس کی اعلیٰ عدالت میں دائر کیے مقدمے کے مطابق سیلویسٹر سٹالون فلم کی مکمل آمدنی کی اکاؤنٹنگ چاہتے ہیں۔

سیلویسٹر سٹالون نے 'ڈیمولیشن مین' میں ویسلے سنائیپز کے ساتھ کام کیا تھا۔