'تھینک يو انڈیا، میں پھر آؤں گا'

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption جب جسٹن بیبر سٹیج پر پہنچے تو اس وقت سدیڈیم کھچا گجھ بھرا ہوا تھا اور ان کے مداح زبردست جوش و خروش سے میں تھے

کینیڈا کے پاپ گلوکار جسٹن بیبر نے ممبئی میں ایک طویل انتظار کے بعد گذشتہ رات ایک کنسرٹ میں اپنے بہترین اور عالمی پذیرائی حاصل کرنے والے گانے پیش کیے۔

میوزک کنسرٹ کے لیے انڈیا آنے والے گلو کار جسٹن بیبر نے ممبئی کے ڈی وائی پاٹل سٹیڈیم میں اپنے مداحوں کو تفریح کا زبردست موقع فراہم کیا۔

بدھ کی شام کو تقریباً سوا آٹھ بجے جب جسٹن بیبر سٹیج پر پہنچے تو اس وقت سٹیڈیم بھرا ہوا تھا اور ان کے مداح زبردست جوش و خروش میں تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

ممبئی کے کنسرٹ کے دوران بيبر نے 'ساری'، 'کولڈ'، 'واٹر'، 'آئی ول شو یو'، 'وهئير آر یو ناؤ'، 'بوائے فریںڈ' اور 'بےبی' جیسے عالمی پذیرائی حاصل کرنے والے اپنے گانوں سے سامعین کو محظوظ کیا۔

اطلاعات کے مطابق 50 ہزار سے زیادہ لوگ ان کے پروگرام کو دیکھنے پہنچے تھے اور سٹیڈیم کھچا کھچ بھرا ہوا تھا۔ سٹیڈیم میں مسلسل لوگ جسٹن، جسٹن کی صدائیں بلند کر رہے تھے۔

تقریباً دو گھنٹے تک شائقین کی زبردست تفریح ​​کرانے کے بعد جسٹن بیبر نے کہا: 'تھینک يو انڈیا، میں پھر آؤں گا۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ممبئی میں جسٹن بیبر کے مداح

جسٹن بيبر ممبئی میں جہاں جہاں گئے ان کے پرستار ان کا انتظار کرتے دیکھے گئے۔

اس کنسرٹ سے قبل ممبئی پہنچنے کے بعد جسٹن بیبر نے یتیم خانے کے کچھ غریب بچوں کے ساتھ وقت گزارا اور وہ ممبئی کے ایک مال میں بھی گئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

جسٹن بیبر کے دیوانے صرف نوجوان اور لڑکے لڑکیاں ہی نہیں بلکہ بہت سے معروف بالی وڈ فنکار بھی ہیں جو انھیں سننے کے لیے پہنچے تھے۔

بالی وڈ کی اداکارہ عالیہ بھٹ، سری دیوی، جیکولین فرنینڈز، بپاشا باسو، روینا ٹنڈن، جلال چودھری، ملائیکہ ارورہ اور فلم ساز اور ہدایت کار ارباز خان جیسی ہستیاں بھی کنسرٹ دیکھنی پہنچی تھیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption روینہ ٹنڈن بھی بیبر کے مداحوں میں سے ہیں

جسٹن بیبر کو دیکھنے کے لیے کئی فلمی ستاروں کے بچے بھی وہاں پر موجود تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ارباز خان اور ملائیکہ اروروہ خان بیبر کے مداح ہیں

ممبئی میں ہونے والا یہ کنسرٹ جسٹن بیبر کے ورلڈ ٹور کا ایک حصہ تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

انڈیا کے اپنے اس دورے کے دوران انھوں نے محبت کی علامت کے طور پر معروف آگرہ کے تاج محل کو بھی دیکھنے کی خواہش ظاہر کی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں