اب تو ابھجیت کے پاس ٹویٹر بھی نہیں ہے

ابھیجیت اور سونو نگم تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption سونو نگم اس سے قبل اذان پر اپنے کئی ٹویٹس کے سبب موضوع بحث بنے تھے

اس ہفتے بالی وڈ کے کچھ نامور لوگو ں کی جانب سے سوشل میڈیا پر ہونے والی طوفانِ بد تمیزی نے یہ واضح کر دیا کہ ملک کے بدلتے سیاسی حالات نے بالی وڈ کو بھی اپنی گرفت میں لینا شروع کر دیا ہے۔

پہلے جواہر لعل نہرو یونیورسٹی کی طالبِ علم شہلا رشید کے بارے میں سابق گلوکار ابھجیت بھٹّا چاریہ کی بیہودہ ٹویٹ کے بعد ان کا ٹوئٹر اکاؤنٹ ڈلیٹ کر دیا گیا اور ان کے ساتھ اظہار ہمدردی میں گلوکار سونو نگم نے ٹویٹر کو الودع کہہ دیا۔

٭ ’انڈیا میں مذہبی زبردستی کب ختم ہو گی‘

٭ فلم باہو بلی پر ہندو مسلم کی بحث

اب ایسے میں اداکار پریش راول کہاں پیچھے رہنے والے تھے ان کے دل میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے لیے بھکتی جاگی اور انھوں نے اسے دیش بھکتی کا نام دیتے ہوئے انسانی حقوق کی کارکن ارون دھتی رائے کو کشمیر میں پتھر بازوں کو روکنے کے لیے جیپ کے سامنے باندھنے کا مشورہ دے ڈالا۔

بحر حال انھیں بھی ٹویٹ ڈلیٹ کرنے کا مشورہ دیا گیا۔ پریش جی نے ٹویٹ ڈلیٹ تو کی لیکن احتجاج کے ساتھ۔ انوپم کھیر اور پریش راول کی بی جے پی بھکتی سمجھ میں آتی ہے اور اس بھکتی کے لیے انھیں انعام ملنے کا چانس بھی ہے لیکن ابھجیت بھٹّا چاریہ کے ساتھ بہت برا ہوا وہ بیچارے تو تقریباً بے روزگار تھے۔ پہلے ہی ان کے پاس کام نہیں تھا اور اب تو ٹویٹر بھی نہیں ہوگا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption عامر خان کی فلم دنگل اور کئی زبانوں میں ایک ساتھ ریلیز ہونے والی فلم باہو بلی میں کمائی کے معاملے میں مقابلہ جاری ہے

عامر خان کی فلم 'دنگل' عالمی باکس آفس کی کمائی کے ساتھ ڈیڑھ ہزار کروڑ کا ہندسہ پار کر کے فلم 'باہو بلی' سے آگے نکل گئی ہے۔ 'باہو بلی' کی ریلیز کے بعد سے ہی 'دنگل' کے ساتھ اس فلم کا موازنہ کیا جا رہا ہے لیکن عامر خان کا کہنا ہے کہ دونوں فلموں کا موازنہ کرنا ٹھیک نہیں دونوں ہی انڈیا کی فلمیں ہیں اور دونوں دنیا بھر میں نام اور پیسہ کما رہی ہیں۔

ویسے یہ بات کافی حد تک درست ہے کہ فلموں کا موازنہ کرنا درست نہیں اب اگر ملک کے نیشنل فلم ایوارڈ سے متعلق جیوری نے بھی اچھا کیا کہ ایوارڈ کے لیے فلم 'رستم' اور 'دنگل' کا موازنہ نہیں کیا اگر وہ ایسا کرتے تو اکشے کمار ایک بار پھر ایوارڈ سے محروم ہو جاتے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption فلم ہاف گرل فرینڈ میں شردھا کپور کی اداکاری کو سراہا جا رہا ہے

ارجن کپور اور شردھا کپور کی فلم 'ہاف گرل فرینڈ' ٹھیک ٹھاک کمائی کر رہی ہے اور 50 کروڑ کا ہندسہ پار کرنے میں کامیاب ہو گئی ہے۔ اب اگر ناقدین کو فلم پسند نہیں آئی تو کیا ہوا۔ فلم میں بھاری بھرکم ارجن کپور نے 19 سال کے ایک کالج بوائے کا کردار ادا کیا ہے۔ بحر حال ناقدین نے فلم کی ڈائریکشن اور اداکاری کے حوالے سے ارجن کو آڑے ہاتھوں لیا۔

ارجن کپور کو میڈیا اور ناقدین کی بات پسند نہیں آئی اور انھوں نے بھی جواب دیتے ہوئے کہا کہ فلمیں ناقدین کے لیے نہیں بلکہ عوام کے لیے بنائی جاتی ہیں جنھیں یہ فلم پسند آ رہی ہے اور لوگ ان کی فلم کے لیے سنیما گھروں کا رخ کر رہے ہیں۔ یہ بات درست ہے کہ لوگ سنیما گھرو کا رخ کر رہے ہیں لیکن ارجن شاید یہ بھول گئے کہ فلم میں شردھا کپور بھی ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں