بی بی سی: ’مردوں کی تنخواہوں میں کٹوتی ممکن ہے‘

کرس تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption کرس ایونز کی آمدن 22 سے 25 لاکھ پاؤنڈز کے درمیان ہے

بی بی سی میں زیادہ تنخواہیں حاصل کرنے والے مردوں سے کہا جاسکتا ہے کہ وہ تنخواہوں میں کٹوتی کو تسلیم کریں جس کی وجہ کارپوریشن کی جانب سے مرد و خواتین کی تنخواہوں میں موجود فرق کو ختم کرنے کی کوشش ہے۔

بی بی سی نے بدھ کو جاری ہونے والی اپنی سالانہ رپورٹ میں زیادہ تنخواہیں دینے کا دفاع کیا۔

کارپوریشن نے سنہ 2020 تک صنفی مساوات کا وعدہ کیا ہے۔

بی بی سی ریڈیو اور ایجوکیشن کے ڈائریکٹر جیمز پرنِل کا کہنا ہے کہ تنخواہیوں میں کٹوتی مسئلے کے حل کا حصہ ہیں۔

بی بی سی کے نیوز نائٹ پروگرام میں ان کا کہنا تھا کہ ’بہت سے مردوں کی تنخواہوں میں کٹوتی کی جارہی ہے، جان ہمفریز نے یہ آج آن ائیر کہا ہے۔‘

جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا اب آن ائیر آنے والے مزید مردوں کی تنخواہوں میں بھی کٹوتی ہو گی تو ان کا کہنا تھا کہ ’میں لائیو بات چیت شروع نہیں کر رہا لیکن یہ واضح اقدامات ہیں جو ہم کر سکتے ہیں اور ہم وہ کر رہے ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption کلاڈیا ونکلمین اور ایلکس جونز سب سے زیادہ تنخواہ لینے والی خواتین ہیں

بی بی سی کے ڈائریکٹر جنرل ٹونی ہال کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ مرد و خواتین کے درمیان تنخواہوں میں اس فرق کے لیے ’مزید کچھ کرنا ہوگا۔‘

بی بی سی نے بتایا ہے کہ اس کے معروف اور مشہور چہروں میں ڈیڑھ لاکھ پاؤنڈز سے زیادہ تنخواہ لینے والوں میں دو تہائی مرد ہیں اور ان میں سرفہرست کرس ایونز ہیں جن کی آمدن 22 سے 25 لاکھ پاؤنڈز کے درمیان ہے۔

بی بی سی کی سالانہ رپورٹ 2016 -2017 کے مطابق ان معروف شخصیات میں کلاڈیا ونکلمین سب سے زیادہ تنخواہ لینے والی خاتون ہیں جن کی آمدن گذشتہ سال چار لاکھ پچاس ہزار اور پانچ لاکھ پاؤنڈز کے درمیان رہی۔

’دا ون شو‘ کے ایلکس جونز اس فہرست میں دوسرے نمبر پر ہیں جن کو چار لاکھ سے ساڑھے لاکھ پاؤنڈز کے درمیان دیے گئے۔

اس فہرست میں سب سے بہترین 96 سٹارز میں سب سے زیادہ آمدن والے سرفہرست تمام سات مرد ہیں۔

یہ پہلا موقع ہے کہ ڈیڑھ لاکھ پاؤنڈز سے زیادہ تنخواہ لینے والوں کی فہرست کو عوام کے سامنے ظاہر کیا گیا ہے۔

بی بی سی کے نئے رائل چارٹر کے تحت وہ اس طرح کی معلومات کو ظاہر کرنے کا پابند ہے۔

ایل بی سی ریڈیو پر بات کرتے ہوئے وزیراعظم ٹریزا مے نے کہا: ’ہم دیکھ رہے ہیں کہ بی بی سی خواتین کو وہی کام کرنے کے کم پیسے دے رہا ہے۔ میں چاہتی ہوں کہ خواتین کو بھی برابر تنخواہ دی جائے۔‘

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں