’کنگ آف رومانس‘ کو رومانس سے خطرہ!

شاہ رخ خان اور کاجول تصویر کے کاپی رائٹ YR FILMS
Image caption شاہ رخ خان اور کاجول نے فلم دل والے دلہنیا لے جائيں گے میں یادگار کردار ادا کیے

بالی وڈ کی فلموں میں جب رومانس کا ذکر ہوتا ہے تو اکثر شاہ رخ خان کا نام ذہن میں آتا ہے۔ ’فوجی‘ اور ’سرکس‘ سیریل سے اداکاری کے کریئر کی ابتدا کرنے والے شاہ رخ خان کو فلم ’دیوانہ‘ سے ہندی فلموں میں متعارف کرایا۔

عباس مستان کی فلم ’بازیگر‘ اور یش چوپڑا کی فلم ’ڈر‘ میں انھوں نے ’اینٹی ہیرو‘ کا کردار ادا کیا۔

سلمان خان نے اپنے کریئر کا آغاز رومانوی فلم ’میں نے پیار کیا‘ سے کیا تھا۔ وہ ’ساجن‘ اور ’ہم آپ کے ہیں کون‘ جیسی رومانوی فلموں کا حصہ رہے۔

٭ 'شاہ رخ کے ساتھ رومانس نہ کرنے کا افسوس نہیں'

٭ ’افسوس کہ ایکشن فلموں کا موقع نہیں ملا‘

جبکہ عامر خان نے بھی اپنے کریئر کے ابتدائی دور میں بہت سی رومانوی فلموں میں اداکاری جن میں ’قیامت سے قیامت تک‘، ’دل‘، ’اکیلے ہم اکیلے تم‘ وغیرہ شامل تھیں۔

رومانوی فلموں سے کریئر کی ابتدا کرنے کے باوجود سلمان خان اور عامر خان ہندی فلموں کے ’رومانس کنگ‘ نہ بن پائے، جبکہ منفی کردار سے اداکاری کا نقش قائم کرنے والے شاہ رخ خان ’رومانس کنگ‘ بن گئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ YR FILMS
Image caption شاہ رخ نے اپنے زمانے کی تقریبا تمام بڑی ہیروئنز کے ساتھ اداکاری کی ہے

ان کی رومانوی فلموں میں سپر ہٹ ’دل والے دلھنيا لے جائیں گے‘، ’دل تو پاگل ہے‘، ’پردیس‘، ’کچھ کچھ ہوتا ہے‘، ’محبتیں‘، ’ویر-زارا‘، ’کل ہو نہ ہو‘، ’جب تک ہے جاں‘ وغیرہ شامل ہیں۔

اب وہ امتیاز علی کی رومانوی فلم ’جب ہیری میٹ سیجل‘ میں انوشکا شرما کے ساتھ رومانس کرتے طرح نظر آئیں گے۔

شاہ رخ نے اپنے کریئر میں 20 سے زیادہ رومانوی فلمیں کی ہیں۔

فلم ناقد اجے برہماتماج کہتے ہیں: ’شاہ رخ خان باہر سے آنے والے اداکار تھے۔ ان کے پاس فلمیں منتخب کرنے کی آزادی نہیں تھی۔ جو فلمیں انھیں ملتی چلی گئيں وہ کرتے گئے۔ ’دل والے دلھنيا لے جائیں گے‘ صرف ان کے لیے نہیں بلکہ فلم انڈسٹری کے لیے ایک بڑا موڑ تھا۔‘

اجے کا خیال ہے کہ شاہ رخ کے پاس خوبصورت رومانوی فلمیں آئیں اور بڑے ڈائریکٹر یش چوپڑا، آدتیہ چوپڑا اور کرن جوہر کے ساتھ کام کرکے ان کی تصویر ’لارجر دین لائف‘ بن گئی تھی۔

’اسی تصویر کو انھوں نے اپنی فلموں میں برقرار رکھا۔ حالانکہ وہ خوبصورت نظر آنے والے اداکار نہیں تھے لیکن مسلسل بڑی سکرین پر دکھائے جانے سے ناظرین کو وہ پسند آنے لگے تھے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ DIL TO PAGAL HAI MOVIE
Image caption فلم دل تو پاگل ہے میں شاہ رخ خان کرشمہ کپور اور مادھوری دیکشت کے ساتھ نظر آ رہے ہیں

وہ مزید کہتے ہیں: ’شاہ رخ کے زیادہ تر کردار متوسط اعلیٰ طبقے کے لڑکے کو متوجہ کرتے ہیں جو ہر طرح سے محفوظ اور خوش حال ہے۔ اسے کسی قسم کا عدم تحفظ نہیں ہے۔ ان کے کردار کو روزی روٹی کی پریشانی نہیں ہے۔ شاہ رخ خان کے کردار کی زندگی خوش و خرم ہے، بس اسے صرف محبت کرنا ہے۔ ایسے رومانوی ہیرو لڑکیوں کو بے حد پسند آتے ہیں۔‘

دوسری جانب سینیئر صحافی جے پرکاش چوكسے کا کہنا ہے کہ ’کنگ آف رومانس‘ میڈیا کی طرف سے دی جانے والی ڈگری ہے۔

وہ کہتے ہیں: ’دلیپ کمار اور راجیش کھنہ کے سنہرے دور میں میڈیا زیادہ نہیں تھی اور صرف چند میگزین میں خبریں چھپتی تھیں۔ اب میڈیا کی تعداد زیادہ ہے اور انھیں زندہ رہنے کے لیے مواد کی ضرورت پڑتی ہے تو اس طرح کی چیزیں وہاں خوب اچھالی جاتی ہیں۔‘

میڈیا سے منسلک سینیئر فوٹو گرافر آر ٹی چاولہ نے شاہ رخ خان کی لمبی اننگز دیکھی ہے۔

انھوں نے بتایا کہ شاہ رخ خان ابتدائی دور میں کسی بھی اداکارہ کے ساتھ تصویر نہیں كھنچواتے تھے۔ انھوں نے سری دیوی اور مادھوری دکشت کے ساتھ جب فلمیں کیں تب ان کے ساتھ تصویریں كھنچوائيں۔

تصویر کے کاپی رائٹ RED CHILLIES PR
Image caption شاہ رخ خان نے دیپکا پاڈوکون کے ساتھ کئی فلمیں کی ہیں

’زمانہ دیوانہ‘ کے سیٹ پر اپنے ساتھ ہونے اولے ایک واقعے کا ذکر کرتے ہوئے آرٹی چاولہ نے بتایا کہ روینا ٹنڈن کے ساتھ بیٹھے شاہ رخ خان نے بڑی اکڑ سے کہا تھا کہ ’جو میرے ساتھ رہے گا وہ 20 سال تک محفوظ رہے گا۔‘

فلمی دنیا میں نیا نیا قدم رکھنے والے شاہ رخ خان کی یہ بات آرٹی چاولہ کو بچگانہ لگیں لیکن ان کا خیال ہے کہ شاہ رخ خان اداکاری کے علاوہ بہت ساری خصوصیات کے مالک تھے۔

جہاں اس دور میں دوسرے سپر سٹار اداکار اپنے مداحوں اور میڈیا سے بچتے نظر آتے تھے، وہیں شاہ رخ خان بڑی محبت سے ان سے ملتے تھے۔ ان کے اس رویے نے انھیں مقبول بنایا۔

فلم ناقد اجے برہمااتمج کا یہ بھی خیال ہے کہ شاہ رخ خان کو بہترین گانے بھی ملے جس میں ان کے باہیں پھیلانے کا انداز بھی مشہور ہو گیا۔

وہ کہتے ہیں: ’سلمان خان اور عامر خان گذشتہ دس سالوں میں خود میں نیاپن لائے ہیں۔ دونوں مختلف قسم کی فلموں سے اپنی اداکاری کو نئی وسعتیں دے رہے ہیں جبکہ شاہ رخ خان مختلف فلموں کے ساتھ ساتھ اپنی رومانوی تصویر بھی قائم رکھے ہوئے ہیں پھر چاہے وہ فلم ’رئیس‘ ہو یا ’دل والے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ RED CHILLIES PR
Image caption شاہ رخ اور کاجول کی جوڑی ان کی سب سے کامیاب جوڑی کہی جاتی ہے

تاہم اب اجے کا خیال ہے کہ شاہ رخ خان کے رومانوی امیج میں اب ان کی کمی بنتی جارہی ہے کیونکہ اب شاہ رخ خان کی عمر ڈھل رہی ہے۔ وہ 52 سال کے ہو گئے ہیں اور فلموں میں محبت کا انداز اب بھی 25 سال کی عمر کا ہے۔

جہاں سلمان خان اور عامر خان کی مختلف فلمیں اچھی کمائی کر رہی ہیں وہیں شاہ رخ خان کی رومانوی امیج آنے والے دنوں میں ان کے لیے رکاوٹ بھی بن سکتی ہے۔

شاہ رخ خان کے ساتھ کام کرنے والی زیادہ تر اداکاراؤں کا کہنا ہے کہ ’شاہ رخ خان کسی کے ساتھ بھی رومانس کر سکتے ہیں خواہ وہ بیجان شے ہی کیوں نہ ہو۔‘

رومانوی امیج کی چاہت نہ رکھنے والے شاہ رخ کا کہنا ہے: ’میں نے اپنے کریئر میں رومانوی فلموں سے زیادہ گرے کرادر نبھائے ہیں۔ چار پانچ رومانوی فلمیں کی ہیں جو سب سے زیادہ کامیاب رہیں اور اپنے آپ میں کلاسیک بن گئیں۔ وہی تصویر لوگوں کے دل و دماغ میں ہے اور وہی میری پہچان بھی بن گئی ہے۔‘

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں