امریکی گلوکارہ وٹنی ہوسٹن انتقال کر گئیں

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ہوسٹن کو کئی اعزازات سے نواز گیا۔

امریکی گلوکارہ اور اداکارہ وٹنی ہوسٹن اڑتالیس برس کی عمر میں لاس اینجلس میں انتقال کر گئی ہیں۔

ہوسٹن خاندان کے ایک ترجمان نے اس خبر کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’بدقسمتی سے یہ سچ ہے۔‘

ہوسٹن اپنے زمانے کی مقبول ترین خاتون گلوکارہ رہیں۔ ان کے گانے ’آئی وِل آلویز لو یو‘ اور سیونگ آل مائی لوّ فار یو‘سب سے زیادہ پسند کیے گئے۔

تاہم وقت کے ساتھ ساتھ ان کی زندگی کئی مسائل کا شکار رہی جن میں ان کی گلوکار بوبی براؤن کے ساتھ کشیدہ اور پرتشدد ازدواجی زندگی شامل ہے۔

پولیس کے ترجمان مارک روزن نے نامہ نگاروں کو بتایا کے ہوسٹن بیورلی ہلٹن نامی ہوٹل میں مقامی وقت کے مطابق شام پانچ بجے مردہ حالت میں پائی گئیں۔ ان کی موت کی وجہ تاحال واضح نہیں ہے۔

وٹنی ہوسٹن کا پس منظر روحانیت اور گرجا گھر میں مناجات خوانی سے بھرپور تھا۔ ان کی والدہ بھی مناجات خوانی کرتی تھیں۔

انہوں نے نیو جرسی میں پرورش پائی اور چرچ میں گانا شروع کیا۔ اس کے بعد انہوں نے نیویارک کے نائٹ کلبس میں گانا شروع کر دیا اور ایریسٹا ریکارڈ کی جانب سے گلوکاری سے قبل انہوں نے ماڈلنگ بھی کی۔

انیس سو اسی اور نوے کی دہائی میں اپنے کیریئر کے عروج پر انہوں نے کئی اعزازات حاصل کیے اور کئی مقبول انفرادی گانے اور البم دیے۔ موسیقی کے نقادوں کا کہنا ہے کہ کئی گلوکاراؤں نے ان کے طرزِ موسیقی کی نقل کرنے کی کوشش کی لیکن اُن جتنی خالص اور اچھی کارکردگی نہیں دکھا پائیں۔

وٹنی ہوسٹن نے بطورِ اداکارہ بھی کئی فلموں میں کامیابی حاصل کی۔ ان کی مقبول فلموں میں ’دی باڈی گارڈ‘ اور ’ ویٹنگ ٹو ایکزیل‘ شامل ہیں۔

حالیہ برسوں منشیات کے استعمال کی وجہ سے پاپ موسیقی میں بہترین آواز قرار دی جانے والی اس گلوکارہ کی آواز پر کافی پرا اثر پڑا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

بوبی براؤن کے ساتھ ان کی شادی دو ہزار سات میں طلاق پر ختم ہوئی۔ براؤن سے ان کی ایک بیٹی بوبی کرسٹینا ہیں۔ ان کی یہ شادی تشدد اور گھریلو استحصال کے الزامات سے بھرپور تھی۔

دو ہزار دو میں اے بی سی اور ایک انٹرویو میں ہوسٹن نے کہا تھا کہ ’سب سے بڑا شیطان میں ہوں۔ میں خود یا تو اپنی سب سے اچھی دوست ہو یا سب سے بُری دشمن۔‘

نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ ہوسٹن کی موت بلاشبہ موسیقی کی دنیا کے گریمی ایواڈز پر اثر انداز ہوگی جو اتوار کو لاس اینجلس میں منعقد ہو رہے ہیں۔ وہ اس تقریب میں شرکت کرنے والی تھیں اور ان کے قریبی دوست کلیو ڈیوس نے حال میں یہ اشارہ بھی دیا تھا کہ وہ شاید اس تقریب میں اپنے فن کا مظاہرہ کریں گی۔

انہوں نے خبر رساں ادارے اے پی کو بتایا تھا ’یہ ان کی سال کی پسندیدہ رات ہے، اور شام کے اختتام پر کیا ہو کوئی نہیں جانتا۔‘

اسی بارے میں