اسرائیلی ایٹمی پروگرام پر نظم پر تنقید

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption گراس نے اسرائیل کے خفیہ ایٹمی پروگرام کا ایران کے اعلانیہ ایٹمی عزائم سے موازنہ کیا ہے

اسرائیل کے ایٹمی پروگرام کے بارے نظم لکھنے پر جرمنی کے نوبل انعام یافتہ شاعر کو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

گنٹر گراس جرمنی کے مشہور شاعر اور ادیب ہیں لیکن ان کی ایک تازہ نظم نے انہیں جیسے توپ کے دہانے کے سامنے لاکھڑا کیاہے۔

جرمنی کے بعض اہم جریدوں میں شائع ہونے والی اس نظم میں مسٹر گراس نے اسرائیل کے ایٹمی پروگرام کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے اسے عالمی امن کے لیے خطرہ قرار دیا ہے۔

جرمنی میں بسنے والے یہودیوں کی تنظیم نے اس نظم کو نفرت انگیز دستاویز قرار دیا ہے جبکہ حکمران جماعت کرسچیئن ڈیموکریٹس کا کہنا ہے کہ مسٹر گراس شاعر تو بہت عمدہ ہیں لیکن سیاسی سوجھ بوجھ کی کمی ہمیشہ ان کے رتبے میں کمی کا باعث بنی ہے۔

اس متنازعہ نظم میں جرمن زبان کے اس شاعر نے اسرائیل کے خفیہ ایٹمی پروگرام کا ایران کے اعلانیہ ایٹمی عزائم سے موازنہ کیا ہے۔

مسٹر گراس کہتے ہیں کہ اسرائیل کی جانب سے ایران کے خلاف ایٹمی پروگرام جاری رکھنے پر دھمکیاں دینا بلا جواز ہے۔