ستار کے بے تاج بادشاہ پنڈت روی شنکر کا انتقال

آخری وقت اشاعت:  بدھ 12 دسمبر 2012 ,‭ 04:26 GMT 09:26 PST

پنڈت روی شنکر مغربی ممالک میں بھی کافی مقبول تھے

مشہور ستار نواز پنڈت روی شنکر مختصر علالت کے بعد امریکی ریاست کیلیفورنیا میں انتقال کر گئے ہیں۔

ان کی عمر بانوے برس تھی اور وہ گزشتہ کچھ دنوں سے پھیپھڑوں میں انفیکشن سے متاثر تھے۔

پنڈت روی شنکر کو گزشتہ دنوں سانس لینے میں تکلیف کی وجہ سے سان ڈیاگو کے سكرپس میموریل ہسپتال میں داخل کیا گیا تھا جہاں وہ منگل کی شب چل بسے۔

سات اپریل انیس سو بیس کو بھارتی شہر وارانسی(بنارس) کے ایک بنگالی خاندان میں جنم لینے والے روی شنکر ابتدائی طور پر اپنے بھائی کے طائفے میں بطور رقاص شامل تھے۔

اٹھارہ برس کی عمر میں انہوں نے رقص ترک کر کے ستار بجانا شروع کیا اور عالمی شہرت حاصل کی۔

انہوں نے بھارتی موسیقی کو مغرب میں مقبول بنانے میں اہم کردار ادا کیا۔ وہ مغربی ممالک میں بھی کافی مقبول تھے اور انہیں تین گریمی ایوارڈ بھی ملے تھے۔

انہوں نے بیٹلز اور رولنگ سٹونز جیسے مغربی موسیقار گروپوں کے ساتھ بھی اپنے فن کا مظاہرہ کیا تھا۔اس کے علاوہ انہوں نے رچرڈ ایٹنبرو کی مشہور فلم ’گاندھی‘ سمیت کئی مشہور فلموں کی موسیقی بھی ترتیب دی تھی۔

انہیں بھارتی حکومت نے پدم بھوشن کے علاوہ انیس سو ننانوے میں اپنے اعلیٰ ترین شہری اعزاز بھارت رتن سے بھی نوازا تھا۔

پنڈت روی شنکر کی دونوں بیٹیاں ستار نواز انوشکا شنکر اور گریمی ایوارڈ یافتہ نوراہ جونز دنیائے موسیقی میں اہم مقام رکھتی ہیں۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔