کمل ہاسن کی ’وشو روپم‘ پر تنازع ختم

آخری وقت اشاعت:  اتوار 3 فروری 2013 ,‭ 17:26 GMT 22:26 PST

جنوبی بھارت کے فلم سٹار کمل ہاسن اور مسلم رہنماؤں کے درمیان ان کی فلم وشو روپم پر معاہدہ ہونے کے بعد اب فلم سے متعلق تنازع ختم ہو گیا ہے۔

خبررساں ادارے پی ٹی آئی نے کمل ہاسن کے حوالے سے اطلاع دی ہے کہ مسلم تنظیموں سے بات چیت کے بعد کمل ہاسن نے کہا کہ ’وشو روپم‘ پر تنازع ختم ہو گیا ہے اور اب اس فلم کے خلاف کوئی مظاہرہ نہیں ہوگا۔

سنیچر کو کمل ہاسن اور کچھ مسلم تنظیموں کے رہنماؤں کے درمیان چنئی میں تقریباً پانچ گھنٹے تک بات چیت ہوئی جس کے بعد فریقین کے درمیان اتفاق طے پایا۔

بعد میں نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کمل ہاسن نے کہا کہ وہ کچھ مناظر کاٹنے کے لیے تیار ہیں اور میڈیا کے مطابق تقریباً سات منظر فلم سے ہدف کیے جائیں گے۔

مسلم تنظیموں نے اپنا اعتراض واپس لے لیا ہے اور سنیچر کو تمل ناڈو کے داخلہ سیکریٹری کی موجودگی میں انہوں نے کمل ہاسن کے بڑی بھائی چندر ہاسن سے بات کی تھی۔

جمعہ کو کمل ہاسن اپنی فلم کے ہندی ورژن کی ریلیز کے لیے ممبئی میں تھے اسی لیے اس بات چیت میں شامل نہیں ہو سکے تھے۔

ریاست کی بعض مسلم تنظیموں اور مسلم رہنماؤں نے کمل ہاسن کی نئی فلم کو فرقہ پرستی پر مبنی قرار دیتے ہوئے اس پر پابندی لگانے کا مطالبہ کیا تھا۔

مسلم تنظیموں کا کہنا ہے کہ اس طرح کی فلم سے مسلمانوں کے جذبات مجروح ہوں گے۔

اس سے پہلے وزیرِ اعٰلی جے للتا نے ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ فلم کی ریلیز کی بات کئی دنوں سے چل رہی تھی اور کمل ہاسن کے پاس اس مسئلے کو حل کرنے کے لیے کافی وقت تھا اور اگر کمل ہاسن چاہتے تو اس تنازع کو حل کرنے کی کوشش کر سکتے تھے۔

جے للتا کا کہنا تھا کہ ریاست میں امن و قانون قائم رکھنے کے لیے فلم پر پابندی لگانا ضروری تھا۔

مسلم تنظیموں کی جانب سے اعتراض کے بعد تمل ناڈو کی حکومت نے فلم کی ریلیز پر پابندی لگا دی تھی جس کے بعد کمل ہاسن نے پابندی کے خلاف مدراس ہائی کورٹ میں اپیل دائر کی تھی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔