ہالی وڈ: آسکر ایوارڈز کی تیاریاں مکمل

آخری وقت اشاعت:  پير 25 فروری 2013 ,‭ 01:41 GMT 06:41 PST

کوڈک تھیٹر میں آسکرز کی روایتی تقریب کی سب تیاریاں مکمل ہیں

ہالی وڈ میں دنیائے فلم کے معتبر ترین ایوارڈ سمجھے جانے والے آسکر یا اکیڈمی ایوارڈز کی تقریب میں فنکاروں کی آمد شروع ہوگئی۔

پچاسیویں اکیڈمی ایوارڈز کی سالانہ تقریب اتوار کو پاکستان کے مقامی وقت کے مطابق صبح ساڑھے چھ بجے امریکی شہر لاس اینجیلیس کے کوڈک ڈولبی تھیٹر میں شروع ہوگی۔

اس تقریب میں فلمی دنیا کے تمام بڑے نام شرکت کر رہے ہیں جنہیں ’ریڈ کارپٹ‘ پر دیکھنے کے لیے شائقین کی بڑی تعداد جمع ہوئی۔ اس موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔

تقریب میں سب سے پہلے پہنچنے والوں میں فلم ’زیرو ڈارک تھرٹی‘ کی جیسیکا چیسٹین تھیں جو بہترین اداکارہ کے لیے نامزد ہیں۔ اس موقع پر انہوں نے کہا ’آج میں آسکر جیتنے والی نہیں۔ میرے خیال میں یہ سال میرا نہیں ہے۔‘

سیتھ میکفلیرن اس تقریب کی میزبانی کے فرائض سرانجام دے رہے ہیں اور تقریب کے دوران اپنے فن کا مظاہرہ کرنے والوں میں شرلے بیسے، نورا جونز اور باربرا سٹریسنڈ شامل ہیں۔

گلوکارہ ایڈیل جیمز بانڈ سیریز کی فلم سکائی فال کا ’تھیم سانگ‘ گا کر اس سیریز کی فلموں کے پچاس برس کی تکمیل کے جشن کا حصہ بنیں گی۔

رواں برس آسکرز کے لیے مقابلے کو کئی برسوں کے دوران سب سے غیریقینی قرار دیا جا رہا ہے اور کسی ایک فلم کے زیادہ ایوارڈ جیتنے کا امکان ظاہر نہیں کیا جا رہا۔

بہترین فلم کے لیے اصل مقابلہ اداکار اور ہدایتکار بین ایفلک کی فلم ’آرگو‘ اور شہریت یافتہ ہدایتکار اور فلمساز سٹیون سپیلبرگ کی فلم ’لنکن‘ کے درمیان ہونے کی توقع ہے۔

"آج میں آسکر جیتنے والی نہیں۔ میرے خیال میں یہ سال میرا نہیں ہے۔"

جیسیکا چیسٹن

اس فلم کو رواں برس سب سے زیادہ بارہ نامزدگیاں ملی ہیں جبکہ لائف آف پائی کوگیارہ، لا میزاب اور سلور لائننگ پلے بک کو آٹھ آٹھ جبکہ آرگو کو سات شعبوں میں نامزد کیا گیا ہے۔

فلم ’لنکن‘ میں امریکی صدر ابراہم لنکن کو اپنی صدارت کے آخری چار ماہ میں خانہ جنگی اور غلامی ختم کرنے کے لیے قانون سازی کی جدوجہد میں سرگرداں دکھایا گیا ہے۔

اس کے مقابلے میں ’آرگو‘ ایک سیاسی تھرلر ہے جو 1979 میں سی آئی اے اور کینیڈا کی اس مشترکہ کارروائی کے بارے میں ہے جس کا مقصد چھ امریکیوں کو ایران سے نکالنا تھا۔ اس مقصد کے لیے ایک جعلی فلم کمپنی بھی قائم کی گئی تھی۔

’لنکن‘ میں مرکزی کردار ادا کرنے والے ڈینیئل ڈے لوئیس بہترین اداکار کا آسکر جیتنے کے لیے مضبوط امیدوار ہیں جبکہ اس سال بہترین معاون اداکارہ کے لیے فلم ’لا میزاب‘ کی این ہیداوے فیورٹ ہیں۔

دیگر شعبہ جات میں صورتحال واضح نہیں اور بہترین معاون اداکار کے لیے نامزد ہونے والے پانچوں فنکار ماضی میں یہ ایوارڈ جیت چکے ہیں۔

اس شعبے میں اصل مقابلہ رابرٹ ڈی نیرو، ٹامی لی جونز اور کرسٹوفر والٹز کے درمیان ہوگا۔ ان میں سے ٹامی لی جونز ’لنکن‘ میں اپنی اداکاری کے لیے سکرین ایکٹرز گلڈ ایوارڈ جیت کر آسکرز میں اپنی ممکہ جیت کا اشارہ بھی دے چکے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔