باربیکن نمائش میں میڈونا کا زیرِ جامہ

آخری وقت اشاعت:  بدھ 6 مارچ 2013 ,‭ 10:31 GMT 15:31 PST
میڈونا کا برا

میڈونا کا مخروطی زیر جامہ نمائش کا حصہ ہے

امریکی پاپ سنگر میڈونا کا مخروطی بریزیئر یعنی زیر جامہ فرانسیسی فیشن ڈیزائنر ژاں پال گوٹیئر کو خراج عقیدت پیش کرنے والی ایک نمائش میں رکھا جائے گا۔

گلوکارہ نے 1990 میں اپنے ’بلونڈ ایمبیشن ورلڈ ٹور‘ کے دوران اپنے چوتھے البم ’لائک اے پرییر‘ کی تشہیر کے لیے ان کے ڈیزائن کیے گئے لباس زیب تن کیے تھے۔

یہ پہلی بار لندن کے باربیکن میں آئندہ سال ہونے والی بین الاقوامی ٹور نمائش کے حصے کے طور پر نمائش کی جائے گی۔

گوٹیئر نے کہا ’انگریز ان پہلے لوگوں میں شامل ہیں جو میرے شو میں آئے اور جنہوں نے میرے فیشن کی پذیرائی کی۔‘

انھوں نے مزید کہا ’میں انتہائی پرجوش ہوں کہ شو لندن میں ہو رہا ہے۔ پیرس کے علاوہ اگر کوئی ایسی جگہ ہے جہاں میں رہنا چاہوں گا تو وہ لندن ہی ہے۔‘

کئی چیزیں بطور خاص میڈونا کے لیے تیار کی گئی تھیں۔ واضح رہے کہ گلوکارہ نے اس ڈیزائنر کے ساتھ تیس سال سے زیادہ عرصے تک کام کیا ہے۔

ان کا ایک نمونہ سنہ 2012 میں تیس ہزار پاؤنڈ میں کرسٹی کی نیلامی میں اندازے سے زیادہ دوگنی قیمت پر فروخت ہوا تھا۔

’دی فیشن ورلڈ آف ژاں پال گوٹیئر: فرام دا سائڈ والک ٹو دا کیٹ واک‘ فائن آرٹ کے مونٹریال میوزیم سے اپریل 2014 میں منتقل ہو رہا ہے۔

اس میں تقریبا 140 تیار شدہ ملبوسات شامل ہیں جو ڈیزائنر کے پورے کیریئر پر محیط ہیں۔ واضح رہے کہ ان کا کیریئر 1970 میں پیئر کارڈن کے نوجوان اسسٹنٹ کے طور شروع ہوا تھا۔

میڈونا

میڈونا نے گوٹیئر کے ساتھ تیس سال سے زیادہ کام کیا ہے

ان میں سے بیشتر ملبوسات ان کے ذاتی ذخائر کا حصہ ہیں جن میں گلوکارہ کائلی مائنوگ، رقاصہ دیٹا وون ٹیسی کے لیے تیار کردہ ملبوسات شامل ہیں۔

باربیکن نے اس نمائش کو فیشن کی روایتی بازیافت کے بجائے اسے قائم کرنے کا نیا تجربہ قرار دیا ہے۔

اس میں کیٹ واک کی پیش کش کے ساتھ کنسرٹ، موسیقی کے ویڈیو، فلمز، رقص کی پیش کش اور گوٹیئر کے ٹی وی شو یوروٹریش کے فوٹیج پیش کیے جائیں گے۔

یہ نمائش باربیکن کے دوہزار تیرہ چودہ سیزن کا حصہ ہے۔ ان میں شامل دوسرے شو پوپ آرٹ ڈیزائن ہے جس میں سر پیٹر بلیک اور اینڈی وارہول کے ساتھ ستر فنکار حصہ لے رہے ہیں۔

باربیکن کے ڈائرکٹر سر نیکولس کینین نے کہا ہے کہ سال دوہزاربارہ کافی کامیاب رہا کیونکہ گزشتہ سال کے مقابلے یہاں آنے والے والوں کی تعداد میں چودہ فی صد اضافہ ہوا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔