عدالت سے سنجے دت کی مہلت کی اپیل

سنجے دت
Image caption سنجے دت کو سپریم کورٹ نے پانچ سال قید کی سزا سنائی ہے

بالی وڈ کے معروف اداکار سنجے دت نے سپریم کورٹ سے اپیل کی ہے کہ انہیں جو سزا سنائي گئی ہے اس پر عمل کے لیے انہیں مزید مہلت دی جائے۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ بھارت کی عدالت عظمیٰ سپریم کورٹ نے سنجے دت کو 1993 میں ممبئی میں ہوئے سیریل دھماکوں کے سلسلے میں غیر قانونی طور پر اسلحہ رکھنے پر پانچ برس قید کی سزا سنائی تھی اور اس کےلیے انہیں اٹھارہ اپریل تک کا وقت دیا گیا تھا۔

سنجے دت نے اپنی عرضی میں کہا ہے کہ جیل حکام کے سامنے خود سپردگی کرنے سے پہلے انہیں مزید چند ہفتے درکار ہیں جس کے لیے انہیں مہلت دی جائے۔

اطلاعات کے مطابق ان کی کئي فلمیں شوٹنگ کے درمیانی مراحل میں ہیں جس میں تقریبا 70 سے 100 کروڑ روپے لگے ہوئے ہیں۔

چند روز قبل انہوں نے کہا تھا کہ وہ سزا کے خلاف اپیل یا رحم کی درخواست نہیں دیں گے۔

فلم سٹار کو ممبئی دھماکے کیس میں چھ سال کی قید سنائی گئی تھی اور وہ سال دو ہزار سات سے ضمانت پر تھے۔ اس سے قبل سنجے دت تقریبا ڈیڑھ برس جیل میں رہ چکے ہیں اور اس طرح انہیں اب تقریبا ساڑھے تین برس تک قید میں رہنا ہوگا۔

سال دو ہزار چھ میں انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے بم حملوں میں سو افراد کو مجرم قرار دیا تھا اور ان میں سے بارہ افراد کو سزائے موت اور بیس کو عمر قید سنائی تھی۔

ممبئی میں سن انیس سو ترانوے میں سلسلہ وار بارہ بم دھماکے ہوئے تھے جن میں 257 افراد ہلاک اور 713 زخمی ہوئے تھے۔

اس وقت ٹاڈا عدالت اور سری کرشنا کمیشن رپورٹ نے قبول کیا تھا کہ یہ دھماکے بابری مسجد کے انہدام اور اس کے بعد پھوٹ پڑنے والے فسادات کے ردعمل کے طور پر ہوئے۔

اسی بارے میں