پیانو نواز کی زندگی پر فلم کا ریکارڈ

Image caption ٹیلی فلم میں امریکی پیانو نواز لیبریس کا کردار مائیکل ڈگلس نے ادا کیا

امریکہ میں ایک معروف پیانو نواز لیبریس کے خفیہ معاشقوں پر مبنی ٹیلی فلم کو امریکی ٹیلی ویژن پر ریکارڈ تعداد میں ناظرین نے دیکھا ہے۔

اتوار کو امریکی ٹی وی نیٹ ورک ایچ بی او پر اس فلم کو نشر کیا گیا اور ایک اندازے کے مطابق اسے چوبیس لاکھ افراد نے دیکھا۔

میڈیا ریٹنگ کمپنی نیلسن کے سروے کے مطابق ایچ بی او نیٹ ورک پر نشر کی جانے والی حقیقی زندگیوں پر مبنی فلموں میں’بی ہائینڈ دی کینڈلابر‘ کو دیکھنے والے ناظرین کی یہ ریکارڈ تعداد ہے۔

اس ٹیلی فلم کو اتوار کے بعد جب دوبارہ نشر کیا گیا تو گیارہ لاکھ افراد نے اسے دیکھا۔ فلم کو جون کے پہلے ہفتے میں برطانیہ میں نمائش کے لیے پیش کیا جائے گا۔

اس فلم کے ہدایت کار سٹیون سپیل برگ ہیں اور اس میں سنہ 1950 سے 1970 کی دہائی کے نامور امریکی پیانو نواز لیبریس کا کردار مشہور ادکار مائیکل ڈگلس نے ادا کیا ہے۔

یہ فلم سکاٹ تھرسن کی یادداشتوں پر مشتمل ہے جس میں امریکی پیانو نواز لیبریس کے مصنف کی ساتھ خفیہ معاشقوں کا ذکر کیا گیا ہے۔ فلم میں سکاٹ تھرسن کا کردار میٹ ڈیمن نے ادا کیا ہے۔

اس سے پہلے یہ ٹیلی فلم کانز فلم میلے میں بھی دکھائی گئی تھی۔

یاد رہے کہ امریکہ میں ٹیلی ویژن پر سب سے زیادہ دیکھا جانے والا پروگرام امریکی چینل اے بی سی کا ’ڈانسنگ ود سٹار‘ ہے۔ جس میں معروف افراد ایک پروفیشنل ڈانسر کے ساتھ رقص کی تربیت حاصل کرتے ہیں اور پھر پرفارمنس دکھاتے ہیں۔

اسی بارے میں