ملیشیا نے امریکی بینڈ پر پابندی لگا دی

Image caption بینڈ پر الزام ہے کہ اس نے اپنے گیتوں میں قرآنی آیات کو ملایا ہے

ایک امریکی بینڈ کو اس الزام میں ملیشیا میں پرفارم کرنے سے روک دیا گیا ہے کہ اس سے ملک کے مذہبی احساسات کو ٹھیس پہنچے گی۔

’لیمب آف گاڈ‘ نامی اس میٹل بینڈ کو 28 ستمبر کو ملیشیا میں اپنے فن کا مظاہرہ کرنا تھا، تاہم وزارتِ مواصلات نے اسے اجازت نامہ دینے سے انکار کر دیا ہے۔

کنسرٹ کے منتظم نے کہا ہے کہ بینڈ اور میٹل صنف کو غلط سمجھا گیا ہے۔

ملیشیا کے اخبار دی سٹار کے مطابق گذشتہ ہفتے اسلامی ترقی کے محکمے نے گروپ کی پرفارمنس پر یہ کہہ کر اعتراض کیا تھا کہ بینڈ نے اپنے گیتوں کے اندر قرآنی آیات کو ملا کر گایا ہے۔

لیم آف گاڈ نے ایک بیان میں کہا: ’یہ واضح ہے کہ ان اداروں اور قوتوں نے ہمارے گیتوں کے مطلب پر صرف سرسری نظر ہی ڈالی ہے جنھیں اس سے سب سے زیادہ تکلیف پہنچی ہے‘۔

’ہم سب کو دعوت دیتے ہیں کہ جس کسی کو بھی ہماری موسیقی سے تکلیف پہنچی ہے وہ غلط خبریں پھیلانے سے قبل ہمارے کام کے بارے میں ہمارے ساتھ مکالمہ کرے تاکہ اسے اس کام کا اصل مقصد سمجھایا جا سکے۔

2010 میں اسی بینڈ کے رینڈی بلائتھ پر چیک ری پبلک میں ایک کنسرٹ کے درمیان ایک مداح کو سٹیج سے نیچے دھکا دے کر گرانے کے الزام میں قتل کا مقدمہ عائد کیا گیا تھا۔ اس مداح کے سر پر چوٹ آئی تھی اور وہ کچھ ہفتے بعد انتقال کر گئے تھے۔

بلائتھ کو چیک ری پبلک کی ایک عدالت نے بری کر دیا تھا۔

ملیشیا نے اس سے پہلے بھی مغربی بینڈوں کی پرفارمنس پر پابندیاں لگائی ہیں۔ 2012 میں گلوکارہ ایریکا بادو پر اس وقت پابندی لگا دی گئی تھی جب ان کی ایک ایسی تصویر سامنے آئی جس میں انھوں نے اپنے اوپری جسم پر لفظ ’اللہ‘ گدوا رکھا تھا۔

اسی بارے میں