اسلام مخالف فلم یوٹیوب سے ہٹائیں: امریکی عدالت کا گوگل کو حکم

تصویر کے کاپی رائٹ Youtube
Image caption پاکستان میں متنازع فلم کے بعد یوٹیوب پر پابندی عائد کی دی گئی تھی

امریکہ کی ایک اپیل کورٹ نے گوگل کو پیغمبرِ اسلام کے بارے میں بنائی گئی توہین آمیز فلم کو اپنی ویڈیو شیئرنگ کی ویب سائٹ یوٹیوب سے ہٹانے کا حکم دیا ہے۔

سال 2012 میں جاری ہونے والی’انوسنس آف اسلام‘ یا ’اسلام کی معصومیت‘ نامی فلم کے خلاف پاکستان سمیت مختلف ممالک میں پرتشدد احتجاجی مظاہرے ہوئے تھے۔

تشدد کے ان واقعات میں پاکستان میں 17 کے قریب افراد ہلاک ہو گئے تھے جبکہ ملک کے مختلف شہروں میں نجی اور سرکاری املاک کو نقصان پہنچایا گیا تھا۔

اسی دوران حکومتِ پاکستان نے یوٹیوب پر پابندی لگا دی تھی جو تاحال برقرار ہے۔

توہینِ آمیز فلم کے خلاف مظاہرے

یومِ عشقِ رسول پر 19 ہلاکتیں

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق سان فرانسسکو کی نائتھ سرکٹ اپیل کورٹ میں متنازع فلم میں اداکاری کرنے والی اداکارہ سنڈی لی گارسیا نے درخواست دائر کی تھی کہ نکولا باسولی نکولا نامی فلمساز اور ہدایت کار نے انہیں اور ان کے ساتھی اداکاروں کو بتایا تھا کہ وہ قدیم مصر کے بارے میں بننے والی ایک ایڈونچر فلم حصہ لے رہے ہیں۔

اداکارہ کے بقول فلم کی عکس بندی کے دوران سیٹ پر کبھی پیغمبرِ اسلام کا ذکر تک نہیں ہوا اور نہ ہی کسی مذہب کی کوئی بات کی گئی۔

اپیل کورٹ میں دائر مقدمہ اس فلم میں کام کرنے والے اداکاروں کے خدشات کے متعلق تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption پاکستان میں فلم کے خلاف پرتشدد واقعات میں 19 افراد ہلاک ہوئے تھے جب کہ املاک بھی کو نقصان پہنچایا گیا تھا

عدالت کے جج ایلکس کزنوسکی نے 37 صفحات پر مشتمل فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ ’ کم سرمایے کی کسی غیر پیشہ ور فلم میں اداکاری کی پیشکش میں اکثر ایسا نہیں ہوتا کہ وہ آپ کو فلمی ستاروں کی دنیا میں لے جائے، بہت کم ہی ایسا ہوتا ہے کہ ایک پرعزم اداکارہ کے خلاف فتویٰ دیا جائے۔

’لیکن سنڈی لی گارسیا کے ساتھ بالکل ایسا ہی ہوا جب انھوں نے فلم میں کام کرنے کی ہامی بھری، اگر فلم کو ہٹایا نہیں گیا تو گاریسا کو ناقابل تلافی نقصان پہنچ سکتا ہے کیونکہ انھوں جان سے مارنے کی دھکمیاں ملی ہیں۔‘

ابھی تک یوٹیوب کی انتظامی کمپنی گوگل کی جانب سے کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے۔

اس سے پہلے ستمبر 2012 میں ایک امریکی عدالت نے سنڈی لی گارسیا کی متنازع فلم میں سے ان کے کلپ ہٹا دیے جانے کے بارے میں دائر درخواست مسترد کی دی تھی۔

اسی بارے میں