ملالہ کی تصویر 82 ہزار ڈالر میں نیلام

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption جوناتھن کی جانب سے اس پورٹریٹ کو ملالہ فنڈ کو عطیہ کرنے پر میں ان کی شکرگزار ہوں: ملالہ

پاکستان میں طالبان کے حملے میں زخمی ہونے والی طالبہ ملالہ یوسف زئی کی ایک تصویر نیویارک میں 82 ہزار ڈالر میں نیلام ہوئی ہے۔

یہ پورٹریٹ مشہور برطانوی مصور جوناتھن ییو نے گذشتہ برس بنائی تھی اور اس کی نمائش برطانیہ کی نیشنل پورٹریٹ گیلری میں بھی ہوئی تھی۔

اس روغنی تصویر کا نام ’گرل ریڈنگ‘ ہے اور اس میں ملالہ کو ہوم ورک کرتے دکھایا گیا ہے۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق بدھ کی شام ہونے والی نیلامی سے قبل نیلام گھر کرسٹی نے اس کی قیمت کا اندازہ 60 سے 80 ہزار ڈالر کے درمیان لگایا تھا۔

اس پورٹریٹ کی نیلامی سے ہونے والی آمدن ملالہ فنڈ کے تحت نائجیریا میں لڑکیوں کی تعلیم کے لیے استعمال کی جائے گی۔

پورٹریٹ کے خالق جوناتھن ییو کی ملالہ اور ان کی خاندان کے ساتھ پہلی ملاقات گذشتہ برس اپریل میں اس وقت ہوئی تھی جب ملالہ صحت یاب ہو رہی تھیں اور انھوں نے برطانیہ میں سکول جانا شروع کر دیا تھا۔

مصور نے کہا کہ وہ اس پورٹریٹ کے ذریعے اس ’زبردست تضاد‘ کو ظاہر کرنا چاہتے تھے جس میں ملالہ ’بےحد طاقت اور دانش‘ کی حامل ہونے کے ساتھ ساتھ بہت کم عمر بھی ہیں۔

انھوں نے کہا کہ ملالہ کا ’پیدائشی جذبہ خود پر ترس کھانا نہیں تھا بلکہ یہ تھا کہ وہ اپنی طرح کے حالات کا شکار دوسری لڑکیوں کے لیے کیا کر سکتی ہیں۔‘

17 سالہ ملالہ یوسف زئی پر اکتوبر 2012 میں سوات کے مرکزی شہر مینگورہ میں اس وقت حملہ کیا گیا تھا جب وہ سکول سے گھر واپس آ رہی تھیں۔

حملے میں زخمی ہونے کے بعد ملالہ کا علاج پاکستان میں کیا گیا اور بعد میں برطانوی شہر برمنگھم علاج کے لیے منتقل کر دیا گیا۔ اب صحت یابی کے بعد اسی شہر میں مقیم ہیں اور دنیا بھر خصوصاً پاکستان میں لڑکیوں کی تعلیم کے لیے مہم چلا رہی ہیں۔

اسی بارے میں