مودی کی تقریب میں ’دیدی‘ شامل نہیں ہوں گی

تصویر کے کاپی رائٹ AB Corp Ltd
Image caption گذشتہ کچھ برسوں میں امیتابھ بچن اور نریندر مودی کی قربت میں اضافہ ہوا ہے جبکہ امیتابھ بچن گجرات ٹورزم کے برانڈ ایمبیسڈر بھی ہیں

کئی دنوں سے بھارتی میڈیا میں نریندر مودی کے وزیراعظم کے عہدے کی حلف برداری کی تقریب کے سلسلے میں مہمانوں کی فہرست کے بارے میں خبریں دی جا رہی ہیں۔

جہاں جنوبی ایشیائی ممالک کے سربراہ مملکت کو مدعو کیے جانے کی خبریں ہیں وہیں بالی وڈ سے بھی اس تقریب میں مشاہیر کی شرکت کی خبریں دی جا رہی ہیں۔

اس فہرست میں امیتابھ بچن، لتا منگیشکر، سلمان خان اور جنوبی ہند کے سپر سٹار رجنی کانت کی شرکت کی خبریں ہیں لیکن اطلاعات ہیں کہ امیتابھ بچن اس تقریب میں شرکت کے لیے دہلی نہیں آ رہے ہیں۔

بی بی سی کو امیتابھ بچن کی پی آر ٹیم نے بتایا کہ ’امیتابھ کا اس تقریب میں شامل ہونے کا کوئی پروگرام نہیں ہے۔‘

امیتابھ بچن کی پی آر ٹیم نے اس بات کی بھی تصدیق نہیں کی کہ آیا امیتابھ کو تقریب میں شرکت کی دعوت ملی بھی ہے یا نہیں۔

گذشتہ کچھ برسوں میں امیتابھ بچن اور نریندر مودی کی قربت میں اضافہ ہوا ہے۔ امیتابھ بچن گجرات ٹورزم کے برانڈ ایمبیسیڈر بھی ہیں۔ اس کے پہلے بھی دونوں کی کئی تقاریب ملاقات رہی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption گذشتہ دنوں سلمان خان نے مودی کی تعریف کی تھی اور ان کے ساتھ پتنگ بازی کی تھی

امیتابھ بچن نے سنہ 2009 میں اپنی فلم ’پا‘ کا پریمیئر گجرات میں کیا تھا، اس وقت نریندر مودی کو اس میں مدعو کیا گیا تھا اور دونوں بڑی گرم جوشی سے ملے تھے۔

اسی طرح برصغیر کی معروف گلوکارہ لتا منگیشکر بھی مودی کی حلف برداری کی تقریب میں شرکی نہیں کر رہی ہیں۔

لتا منگیشکر کے مینیجر پریتم نے بی بی سی کو بتایا: ’لتا دیدی کو مودی جی نے تقریب میں مدعو تو کیا ہے لیکن دیدی اس میں شامل نہیں ہو پائیں گی۔‘

انھوں نے بھی لتا کے عدم شرکت کی کوئی وجہ نہیں بتائی۔ لتا منگیشکر کئی بار عوامی پلیٹ فارم پر نریندر مودی کو وزیراعظم کے عہدے کے لیے اپنی پہلی پسند کے طور پر بتا چکی ہیں۔

Image caption لتا منگیشکر کئی بار مودی کو وزیر اعظم کے عہدے کے لیے اپنی پہلی پسند بتا چکی ہیں

گجرات کے تاجر اور مودی کے ساتھی ظفر سریش والا نے بی بی سی کو ایک انٹرویو کے دوران بتایا کہ مودی کی حلف برداری کی تقریب میں سلمان خان شرکت کر رہے ہیں اور وہ انھیں لینے ایئرپورٹ جا رہے ہیں۔

واضح رہے کہ سلمان خان بھی نریندر مودی کو ایک موثر منتظم تسلیم کرتے ہیں اور اس سال اپنی فلم ’جے ہو‘ کی ریلیز سے پہلے وہ اس کے تشہیر کے سلسلے میں جب احمد آباد گئے تھے تو نریندر مودی سے ملے تھے اور ان کے ساتھ پتنگ بازی بھی کی تھی۔

یاد رہے کہ مسلمانوں کے کئی سرکردہ شخصیات اور رہنماؤں نے سلمان خان پرتنقید بھی کی تھی۔

اسی بارے میں