ملکۂ حسن کے قاتل گرفتار

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption دونوں خواتین گذشتہ جمعرات سے لاپتہ تھیں اور دونوں کو آخری بار سارنتا باربرا کے علاقے میں منعقدہ ایک تقریب سے نکلتے ہوئے دیکھا گیا تھا

ہونڈیورس میں پولیس نے ملک کی 19 سالہ ملکۂ حسن ماریہ ہوزے الواردو اور ان کی بہن صوفیہ ٹرینڈیڈ کے قتل کے حوالے سے دو افراد کو گرفتار کیا ہے۔

ماریہ ہوزے الواردو اور ان کی بہن صوفیہ ٹرینڈیڈ کی لاشیں شمالی شہر سارنتا باربرا سے برآمد ہوئی ہیں۔

دونوں خواتین گذشتہ جمعرات سے لاپتہ تھیں اور دونوں کو آخری بار سارنتا باربرا کے علاقے میں منعقدہ ایک تقریب سے نکلتے ہوئے دیکھا گیا تھا۔

ملکۂ حسن مردہ حالت میں پائی گئیں

پولیس کا کہنا ہے کہ صوفیہ ٹرینڈیڈ کے گرفتار بوائے فرینڈ پُلوٹارکو روئیز نے انھیں گولی مارنے اور بعد ازاں دفن کرنے کا اعتراف کیا ہے۔

ماریہ اپریل میں ہونڈیورس کی ملکۂ حسن منتخب ہوئی تھیں اور انھوں نے لندن میں منعقد ہونے والے آئندہ مس ورلڈ کے مقابلۂ حسن میں شرکت کرنا تھی۔

حسن ماریہ ہوزے الواردو اور ان کی بہن صوفیہ ٹرینڈیڈ کی لاشیں ایک دریا کے قریب سے برآمد ہوئیں۔

ہونڈیورس کے قومی پولیس ڈائریکٹر جنرل رامن سبیلون نے میڈیا کو بتایا کہ صوفیہ ٹرینڈیڈ کےگرفتار بوائے فرینڈ پُلوٹارکو روئیز نے دونوں بہنوں کے قتل کا اعتراف کر لیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اقوامِ متحدہ کی رپورٹ کے مطابق ہونڈیورس میں ایک لاکھ میں سے 90.4 لوگ قتل کر دیے جاتے ہیں اور یہ شرح دنیا میں سب سے زیادہ ہے

قومی بیوریو کے سربراہ لیناردو اوساریو کا کہنا ہے کہ پُلوٹارکو نے ٹرینڈیڈ کو کسی دوسرے شخص کے ساتھ رقص کرتے دیکھا اور حسد میں آ کر انھیں گولی مار کر ہلاک کر دیا۔

اس کے بعد انھوں نے ماریہ ہوزے الواردو کو بھی گولی مار کر دونوں کی لاشیں دفن کر دیں۔

اوساریو کے مطابق پولیس نے آلۂ قتل اور واردات کے دوران استعمال ہونے والی گاڑی بھی برآمد کر لی ہے۔

دونوں خواتین کو آخری بار 13 نومبر کو سالگرہ کی ایک تقریب میں بغیر نمبر پلیٹ کے ایک گاڑی سے نکلتے ہوئے دیکھا گیا تھا۔

اقوامِ متحدہ کی رپورٹ کے مطابق ہونڈیورس میں ایک لاکھ میں سے 90.4 لوگ قتل کر دیے جاتے ہیں اور یہ شرح دنیا میں سب سے زیادہ ہے۔

اسی بارے میں