میرا لباس کوئی بے وقوف طے نہیں کرے گا: گوہر

تصویر کے کاپی رائٹ Parul Gossain
Image caption پولیس نے ملزم اقبال کے خلاف چھیڑ چھاڑ کی دفعہ 354 کے تحت مقدمہ درج کیا ہے

فلم اور ٹی وی کی اداکارہ گوہر خان نے انھیں تھپڑ مارنے والے شخص کے بارے میں کہا ہے کہ اسے کس نے یہ حق دیا کہ میں کیا لباس پہنوں اور کیا نہیں۔

گذشتہ اتوار کو ممبئی کے فلم سٹی سٹوڈیوز میں ایک ریئلیٹی شو ’انڈیاز را سٹار‘ کی آخری قسط کی شوٹنگ کے دوران ایک شخص نے گوہر خان کو تھپڑ مار دیا تھا۔

منگل کو گوہر خان نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’اس شخص کو کس نے یہ حق دیا ہے کہ میں کیا پہنوں اور کیا نہیں، کس کو یہ حق ہے کہ اگر کوئی لڑکی آپ کی مرضی کے خلاف کوئی لباس پہنتی ہے تو اس کے ساتھ ایسا سلوک کرو۔‘

گوہر خان کے مطابق: ’مذہب کے نام پر اپنی بیہودہ حرکتوں کو منصفانہ ٹھہرانا اور بھی جاہلیت ہے۔ اگر ایک اداکارہ ایسی ذہنیت کا شکار ہو سکتی ہے تو عام عورتیں اور لڑکیاں اس ملک میں کیسے محفوظ رہ سکتی ہیں۔‘

گوہر خان نے تھپڑ کے واقعے پر اپنے مداحوں کی حمایت پر ان کا شکریہ ادا کیا۔

Image caption گوہر خان گذشتہ برس بگ باس پروگرام کی فاتح رہی تھیں

اتوار کو ممبئی میں پولیس نے فلم اور ٹی وی کی اداکارہ گوہر خان کو ایک پروگرام کے دوران تھپڑ مارنے والے شخص کے خلاف مقدمہ درج کر لیا تھا۔

پولیس نے ملزم اقبال کے خلاف چھیڑ چھاڑ کی دفعہ 354 کے تحت مقدمہ درج کیا اور انھیں پیر کو بورولي کی عدالت میں پیش کیا گیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ 24 سالہ اقبال ملک نامی ملزم کو گوہر کے لباس پر اعتراض تھا اور وہ چیخ رہا تھا کہ ’گوہر مسلمان ہو کر بھی مختصر لباس پہنتی ہیں، انھیں ایسا نہیں کرنا چاہیے۔‘

مقامی پولیس حکام نے بی بی سی کو بتایا: ’گوہر کو تھپڑ مارنے سے پہلے اقبال نے انھیں چھونے کی کوشش بھی کی اور وہ شوٹنگ کے دوران مسلسل گوہر پر فقرے کس رہا تھا۔‘

پولیس کے مطابق جب گوہر نے اس شخص کو ایسا کرنے سے منع کیا تو ان کے درمیان تکرار ہوئی اور اس دوران ملزم نے انھیں طمانچہ دے مارا۔

اس پر موقعے پر موجود سکیورٹی اہلکاروں نے ملزم کو قابو کر کے پولیس کے حوالے کر دیا۔ پولیس کے مطابق ملزم کا تعلق پٹنہ سے ہے اور وہ ممبئی میں ویٹر کا کام کرتا ہے۔

اسی بارے میں