بالی وڈ کے وہ فنکار جو کاروبار بھی کرتے ہیں

Image caption ’کاروبار سے اداکاروں کو پبلیسٹی ملتی ہے اور پیسہ بھی‘

بالی وڈ میں کامیابی، نام اور شہرت کی عمر چھوٹی ہوتی ہے۔ معلوم نہیں کون راتوں رات سٹار بن جائے اور کون گمنام ہو جائے۔

شاید اسی لیے آج کل اداکار دوسرے کاروبار میں بھی سرمایہ کاری کر رہے ہیں۔

بی بی سی نے اداکاروں اور ان کے کاروبار پر نظر ڈالی ہے۔

شاہ رخ خان بالی وڈ میں سب سے امیر اداکار کے طور پر جانے جاتے ہیں۔ شاہ رخ خان نے اپنا فلم پروڈکشن ہاؤس ’ریڈ چلی انٹرٹینمنٹ‘ کھول رکھا ہے۔ان کی زیادہ تر فلمیں یہی بناتا ہے۔

شاہ رخ کرکٹ لیگ آئی پی ایل میں کولکتہ نائٹ رائیڈرز کے مالک بھی ہیں۔ شاہ رخ خان نے اس کے علاوہ ’امیجینشن ایجوٹینمنٹ پرائیویٹ لمیٹڈ‘ میں بھی سرمایہ کاری کی ہے جس کی مقامی فرنچائز ’كڈذانيا‘ ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Hoture
Image caption شارخ خان اور سلمان خان بالی ووڈ فلموں کے علاوہ دیگر کئی کاروبار بھی کرتے ہیں

سلمان خان کی ممبئی اور بھارت میں کئی املاک ہیں، جن میں ’پنویل والا‘ فارم ہاؤس مشہور ہے۔

سلمان خان کی کمائی کا بڑا حصہ ان کی اپنی تنظیم ’بينگ ہیومن‘ کو جاتا ہے۔ حال ہی میں سلمان خان نے اپنا پروڈکشن ہاؤس ’سلمان خان پروڈکشن‘ شروع کیا ہے۔

جان ابراہم نے اپنی معاشیات کی ڈگری کا استعمال کرنا شروع کر دیا ہے۔ جان نے ’وکی ڈونر‘ سے کامیاب پروڈکشن ہاؤس شروع کیا ہے اور وہ ہاکی لیگ میں ہاکی ٹیم کے مالک بھی ہیں۔

اکشے کمار کے دو فلم پروڈکشن ہاؤس ہیں، ’گیزنگ گوٹ پکچر لمیٹڈ‘ اور ’ہری اوم انٹرٹینمنٹ‘۔ حال ہی میں اکشے کمار نے راج کندرا اور شلپا شیٹی کے ساتھ مل کر ٹی وی شاپنگ چینل بیسٹ ٹی وی ڈیل شروع کیا ہے۔

اکشے کہتے ہیں کہ’بیسٹ ٹی وی وینچر میں راج کندرا کی زیادہ ذمہ داریاں ہیں اور یہ وینچر میرا زیادہ وقت نہیں لے گا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ HOTURE
Image caption سوناکشی سنہا نے بھی ایک ٹی وی چینل میں سرمایہ کاری کی ہے

شلپا شیٹی کی کاروباری شخصیت راج کندرا سے شادی سے بعد وہ فلموں میں کم اور اپنے شوہر کے ساتھ نئے نئے کاروبار میں ہاتھ آزماتی زیادہ نظر آتی ہیں۔

ان میں آئی پی ایل ٹیم راجستھان رائلز، گولڈ جیولري بزنس، فلم پروڈکشن ہاؤس ’ایسنشل سپورٹس اینڈ میڈیا‘ اور حال ہی میں ٹی وی شاپنگ چینل بیسٹ ٹی وی ڈیل شامل ہیں۔

اجے دیوگن نے پروڈکشن ہاؤس کے ساتھ ساتھ اپنا پیسہ گجرات میں ایک سولر پلانٹ پر لگایا ہے۔ وہ کہتے ہیں، ’بھارت میں ہمیشہ سے ہی توانائی کی ضرورت رہی ہے اور یہ وقت ہے کہ ہم گرین توانائی کو اختیار کریں کیونکہ توانائی کا یہی مستقبل ہے۔‘

سوناکشی سنہا کو فلم انڈسٹری میں قدم رکھے ابھی چند سال ہی ہوئے ہیں لیکن اداکاری کے ساتھ ساتھ انھوں نے شلپا شیٹی اور اکشے کمار کے ساتھ پارٹنر شپ میں ٹی وی شاپنگ چینل بیسٹ ٹی وی ڈیل میں سرمایہ کاری کی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption شلپا شیٹی کی بزنس مین راج کندرا سے شادی سے بعد وہ فلموں میں کم اور اپنے شوہر کے ساتھ نئے نئے کاروبار میں ہاتھ آزماتي زیادہ نظر آتی ہیں

سوناكشي کہتی ہیں، ’اداکاری کے علاوہ ایسی بہت ساری جگہیں ہیں جہاں میں بہتری لا سکتی ہوں اور میں ایسا کروں گی۔‘

سنیل شیٹی کے ممبئ میں کئی ریستوران اور کلب ہیں۔ سنیل شیٹی نے ملبوسات اور ہوم ڈے كیئر کا بزنس بھی شروع کیا ہے۔

کئی اداکار اور اداکاراؤں نے پروڈکشن ہاؤس کھولے ہیں جیسے عامر خان، ارباز خان، انوشكا شرما، اميشا پٹیل۔

کئی مشہور شخصیت نے اپنے گلیمر کے مطابق ملبوسات کے کاروبار میں بھی ہاتھ آزمایا ہے جیسے ہریتك روشن، عاليہ بھٹ، بپاشا باسو، سونم کپور اور دپیکا پاڈوکون۔

کاروباری امور کے ماہر آمود مہرا کا کہنا ہے، ’اداکار برانڈ یا کمپنی کے طور پر جب بہت پیسہ آتا ہے تو آپ اسے اور بڑھانا چاہتے ہیں اور اس سے آپ کی برینڈنگ بھی بڑھتی ہے. مثال کے طور پر شاہ رخ نے ’كڈذانيا‘ میں پیسے لگائے تو وہاں جانے والے بچوں کو شاہ رخ خان کے بارے میں پتہ چلتا ہے تو وہ ان کے مداح بھی بن جاتے ہوں گے۔ دوسرا آپ شہرت ملتی ہیں مثال کے طور پر شلپا شیٹی۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Jitu Savlani
Image caption اجے دیوگن نے پروڈکشن ہاؤس کے ساتھ ساتھ اپنا پیسہ گجرات میں ایک سولر پلانٹ پر لگایا ہے

آمود مہرا کہتے ہیں، ’اداکار اپنی جمع پونجی کئی کاروبار میں پہلے بھی لگاتے رہے ہیں، جیسے کہ لوناولا کی آدھی زمین تو دھرمیندر کی ہے۔ اجے دیوگن نے بھی وہاں زمین لے رکھی ہے۔ جيتندر نے اپنا پیسہ بہت سارا پیسہ نئی عمارتوں کی تعمیر میں لگایا ہے اور سٹاک بھی خریدے ہیں۔ امیتابھ بچن نے کافی پیسہ فارما کمپنی میں لگایا۔ سنجیو کمار اور امجد خان کے ریستوران بھی تھے۔ پر یہ سب ذاتی ہوتے تھے اب یہ ’میڈیا نیٹ‘ بن گیا ہے۔ جس سے اداکاروں کو شہرت ملتی ہے اور پیسہ بھی‘

آمود مہرا یہ بھی کہتے ہیں، ’اداکاروں میں دماغ نہیں ہوتا ہے وہ اداکاری کر سکتے ہیں بزنس نہیں۔ یہ تو انویسمنٹ بینکرز ہوتے ہیں جو اداکاروں کے لیے کاروبار کرتے ہیں۔‘

اسی بارے میں