’آئرن مین‘ کو کس بات پر غصہ آیا؟

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ہیرو رابرٹ ڈاؤنی جونیر ماضی میں منشیات کے استعمال کی عادت کی وجہ سے جیل بھی جا چکے ہیں

ویسے تو فلمی شخصیات کا غصہ کرنا ایک عام بات ہے لیکن اگر وہ غصہ کیمرے کے سامنے دکھاتے ہیں تو خبر بن جاتی ہے۔

ہالی وڈ کی سپر ہیرو فلم سیریز ’آئرن مین‘ سے شہرت پانے والے اداکار رابرٹ ڈاؤنی جونیر کے ساتھ حال میں ایسا ہی ایک واقعہ ہوا جس میں وہ غصے میں ایک انٹرویو کے دوران اٹھ کر چلے گئے۔

ہیرو رابرٹ ڈاؤنی جونیر اپنی نئی فلم’اوینجرز دی ایج آف الٹرن‘ کی تشہیر کے لیے ایک انگریزی چینل کو انٹرویو دے رہے تھے کہ اس دوران میزبان نے ان کی ذاتی زندگی کے بارے میں سوال پوچھ لیے۔

ہیرو رابرٹ ڈاؤنی جونیر کو ماضی میں منشیات کے استعمال کی عادت کی وجہ سے جیل بھی جانا پڑا تھا اور وہ اس وقت کو یاد کرنا پسند نہیں کرتے ہیں۔

انٹرویو میں میزبان نے ان سے پہلا سوال ہی جیل کے بارے میں پوچھ لیا۔

اس پر رابرٹ نے کہا:’ یہ کیسی پروموشن ہے؟ میں بہت ساری ایسی باتیں آپ کو بتا سکتا ہوں جن کا ابھی اس وقت کوئی مطلب نہیں ہے۔‘

اس پر میزبان نے کہا کہ’ مجھے آپ سے بات کرنے کا موقع ملا ہے تو میں آپ سے کچھ سوال پوچھ ہی سکتا ہوں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ہیرو رابرٹ ڈاؤنی کو سپر ہیرو فلم سیریز آئرن مین سے شہرت ملی

اس پر رابرٹ نے کہا کہ آپ کا وقت ختم ہو رہا ہے اور براِئے مہربانی جلدی سے اگلا سوال؟

لیکن میزبان نے دوبارہ ان سے اپنے والد کے ساتھ تعلقات، منشیات کے استعمال اور جیل کے’سیاہ ماضی‘ کے بارے میں پوچھ لیا۔

سوال کے ساتھ ہی رابرٹ ڈاؤنی جونیر غصے سے اٹھ کھڑے ہوئے اور یہ کہتے ہوئے انٹرویو چھوڑ کر چلے گئے کہ’ میں یہاں اپنی فلم کی تشہیر کے لیے آیا ہوں اور کچھ بھی نہیں کہوں گا، معذرت اور شکریہ۔‘

سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر بھی اس انٹرویو کے بارے میں خوب تبصرے ہو رہے ہیں جس میں کچھ لوگ رابرٹ کے اقدام کو ٹھیک کہہ رہے ہیں تو کچھ میزبان کا ساتھ دے رہے ہیں۔‘

بھارت میں بھی اداکار سلمان خان، اکشے کمار اور حال ہی میں کرن بیدی صحافی کے سوالوں سے ناراض ہو کر انٹرویو سے اٹھ کر جا چکے ہیں۔

اسی بارے میں