’نسلی تعصب کی وجہ سے امریکہ سے واپس آئی‘

تصویر کے کاپی رائٹ spice pr
Image caption پرینکا اپنے ہالی وڈ کے پہلے ٹی وی سیریل ’کوانٹیکو‘ میں ایلیکس ویور نام کی ایف بی آئی کی ایک ایجنٹ کا کردار ادا کر رہی ہیں

بالی وڈ کی سپر سٹار اداکارہ پرینکا چوپڑانے کہا ہے کہ امریکہ میں قیام کے دوران وہ اس قدر نسلی تعصب کا شکار ہوئیں کہ انھیں بالآخر امریکہ چھوڑنے کا فیصلہ کرنا پڑا۔

پرینکا چوپڑا نے بی بی سی ہندی کو بتایا کہ وہ 12 برس کی عمر میں تعلیم کے حصول کے لیے امریکہ گئی تھیں لیکن اس دوران انھیں اس قدر نسلی تعصب کا سامنا کرنا پڑا جس سے ان کے جذبات مجروح ہوئے اور وہ وطن واپس لوٹ آئیں۔

پرینکا چوپڑا کہتی ہیں: ’میں نے زندگی میں بہت نسلی تعصب برداشت کیا ہے، مجھے یاد ہے جب میں سکول میں پڑھتی تھی تب مجھےسب ’’براؤنی‘‘ کہہ کر بلایا کرتے تھے۔‘

پرینکا بتاتی ہیں: ’لوگ مجھ سے کہا کرتے تھے کہ گھر جاؤ اور کری بناؤ۔ میں نے دیکھا تھا کہ لوگ بھارتی نژاد افراد کو ایک الگ طرح سے دیکھتے تھے۔‘

پرینکا کے مطابق ’وہ کہتے تھے کہ ہم بھارتی لوگ سر ہلا کر بات کرتے ہیں۔ ہمارا مذاق اڑایا جاتا تھا۔ ہم گھر پر جو کھانا بناتے ہیں اس کھانے کی مہک کا مذاق اڑایا جاتا تھا اور تو اور ہماری طرز فکر کا بھی مذاق اڑایا جاتا تھا۔ ان طعنوں سے تنگ آ کرمیں نے امریکہ چھوڑا اور بھارت آ گئی۔‘

لیکن اب پرینکا چوپڑا امریکہ میں ایک ہالی وڈ پروڈکشن کاحصہ ہیں۔ ان کا کہنا ہے انھیں امریکہ میں اب کچھ تبدیلی نظر آتی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ spice PR
Image caption پرینکا کی نئی فلم ’دل دھڑ کنے دو‘ پانچ جون کو ریلیز ہو رہی ہے

پرینکا آج کل اپنے پہلے ہالی وڈ ٹی وی سیریل ’کوانٹیکو‘ میں ایلیکس ویور نام کی ایف بی آئی کی ایک ایجنٹ کا کردار ادا کر رہی ہیں۔

یہ پہلا موقع ہے جب پرینکا چوپڑا ہالی وڈ کی کسی پروڈکشن میں کام کیا ہو۔

انھوں نے بی بی سی سے خاص بات چیت میں بتایا: ’یہ تھرلرڈرامہ ’کوانٹیکو‘ ایف بی آئی کے ان چند ارکان کی کہانی پر مبنی ہے جو مختلف وجوہات اور مقاصد کے تحت ایف بی آئی سے وابستہ ہو جاتے ہیں۔‘

پرینکا کو لگتا ہے کہ بیرونی ممالک میں بھارتیوں کو کبھی سنجیدگی سے نہیں لیا جاتا۔

وہ کہتی ہیں: ’بھارتی ٹیلنٹ، چاہے اداکار ہو، ہدایت کار یا پھر آرٹسٹ، ان کو وہ مقام نہیں ملتا جس کے وہ مستحق ہیں۔‘

پرینکا نے بتایا کہ بھارتی نژاد لڑکیوں کو اگر ہالی وڈ میں کام ملتا بھی ہے تو انھیں یا تو کسی انڈین فیملی کا کردار کرنے کوملتا ہے جیسے ’انڈین ماں‘ یا پھر کسی ایسی لڑکی کا کردار جوارینجڈ میرج کے کلچر کو دکھاتی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ spice pr
Image caption بھارتی ٹیلنٹ، چاہے اداکار ہو، ہدایت کار یا پھر آرٹسٹ، ان کو وہ مقام نہیں ملتا جس کے وہ مستحق ہیں: پرینکا چوپڑا

ان کا کہنا ہے کہ انھوں نے اس جمود کو توڑنے کی کوشش کی: ’میں نے یہ ٹی وی سیریل اسی شرط پر کیا کہ میرا کردارایک اداکارہ کے طور پر ہو نہ کہ میرے بھارتی ہونے کی وجہ سے۔‘

پرینکا کی نئی فلم ’دل دھڑ کنے دو‘ پانچ جون کو ریلیز ہو رہی ہے۔ اس فلم میں پرینکا کے ساتھ انوشكا شرما، فرحان اختر، انیل کپور اور رنویر سنگھ اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔

اسی بارے میں