بینکسی کے دو فن پاروں کی نیلامی ستمبر میں

تصویر کے کاپی رائٹ Banksy
Image caption نیلامی سے قبل اسرائیل سے لایا گیا میورل لندن میں نمائش کے لیے رکھا جائے گا

سٹریٹ آرٹ یا گرافیٹی تصاویر بنانے کے لیے معروف برطانوی مصور بینکسی کے امریکی شہر ڈیٹرائٹ اور اسرائیلی شہر بیت اللحم کی دیواروں پر بنائے گئے دو فن پارے ستمبر میں نیلام کر دیے جائیں گے۔

ایک تصویر میں فوجی کو گدھے کی شناختی دستاویزات کی جانچ پڑتال کرتے دکھایا گیا ہے اور یہ تصویر اسرائیل اور فلسطین کو تقسیم کرنے والی دیوار پر 2007 میں بنائی گئی تھی۔

دوسری تصویر کا نام ’مجھے یاد ہے کہ جب یہاں ہر طرف درخت تھے‘ ہے، 2010 میں امریکی صنعتی شہر ڈیٹرائٹ کے ایک کارخانے کی دیوار پر بنائی گئی تھی۔

اندازہ ہے کہ یہ دونوں میورلز دس لاکھ ڈالر تک میں نیلام ہو سکتے ہیں۔

ڈیٹرائٹ والا میورل ایک چھوٹی آرٹ گیلری کی ملکیت ہے اور اس کی فروخت سے حاصل ہونے والی رقم کمیونٹی آرٹ سکیموں کے لیے استعمال کی جائے گی۔’

نیلام گھر نے یہ ظاہر نہیں کیا کہ بیت اللحم والا میورل کس نے اس کی اصل جگہ سے ہٹایا اور اس کی فروخت سے حاصل ہونے والی رقم کسے ملے گی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Banksy
Image caption اندازہ ہے کہ یہ دونوں میورلز دس لاکھ ڈالر تک میں نیلام ہو سکتے ہیں۔

جولیئن نامی نیلام گھر کے مطابق بینکسی اپنے فن پاروں کو ان کی اصل جگہ سے منتقل کرنے اور فروخت کرنے کے حق میں نہیں۔

نیلام گھر کا کہنا ہے کہ 30 ستمبر کو امریکی شہر لاس اینجلس میں ہونے والی نیلامی سے قبل اسرائیل سے لایا گیا میورل لندن میں نمائش کے لیے رکھا جائے گا۔

خیال رہے کہ بیکنسی کی بنائی گئی تصاویر حالیہ برسوں میں انتہائی مقبول ہوئی ہیں اور ماضی میں بھی انہیں چرانے کی کوششیں بھی کی جا چکی ہیں۔

مئی دو ہزار دس میں بینکسی کے دو فن پارے لندن کی آرٹ گیلری سے چرائے گئے تھے جبکہ دو ہزار گیارہ میں مرکزی لندن کے ایک ہوٹل کی دیوار پر بنایا گیا فن پارہ اکھاڑ لیا گیا تھا اور بعد ازاں سے ’ای بے‘ ویب سائٹ پر 17 ہزار پونڈ کے عوض فروخت کے لیے پیش کیا گیا تھا۔

.

اسی بارے میں