مصری مصنف اور صحافی جمال الغیطانی انتقال کر گئے

Image caption بطور مصنف انھیں کئی قومی اور بین الاقوامی ایوارڈو سے بھی دیے گئے ہیں

مشہور مصری ناول نگار اور صحافی جمال الغیطانی کا ملک کے دارالحکومت قاہرہ میں انتقال ہو گیا ہے۔

ستر سالہ جمال کو سانس کی تکلیف کے باعث ہسپتال میں داخل کیا گیا تھا جہاں وہ پچھلے دو ماہ سے کومے میں تھے۔

جمال نے اپنی صحافتی زندگی کا آغاز 20 سال کی عمر میں کیا تھا۔ انھوں نے صحافت کے ساتھ ناول نگاری بھی کی اور ان کے کئی ناول بہت مشہور بھی ہوئے۔

جمال کے ناولوں کو دنیا بھر میں پڑھا جاتا ہے اور اسی لیے ان کے بیشتر ناولوں کا مختلف زبانوں میں ترجمہ بھی کیا گیا ہے۔

بطور صحافی جمال سنہ 1973 کی عرب اسرائیل جنگ کے دوران اگلے محاذ سے رپورٹنگ کے فرائض بھی سر انجام دے چکے ہیں۔

بطور مصنف انھیں کئی قومی اور بین الاقوامی ایوارڈز بھی دیے گئے ہیں۔

ان کی وفات کے حوالے سے بات کرتے ہوئے مصر کے وزیرِاعظم شریف اسماعیل کا کہنا تھا کے علم و ادب کے لیے جمال الغیطانی کی خدمات کو فراموش نہیں کیا جا سکتا۔

خیال رہے کہ جمال کا شمار ان دانشوروں میں ہوتا ہے جنھوں نے سنہ 2013 میں فوج کی جانب سے صدر مورثی کی حکومت کا تختہ الٹنے کی حمایت کی تھی۔

اسی بارے میں