شیکسپیئر کے ڈراموں پر مختصر فلموں کی تیاری

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اس منصوبے کے لیے برٹش کونسل، لندن کے میئر اور ایک نامعلوم عطیہ کنندہ کی مدد سے گلوب کو پانچ لاکھ یورو ادا کیے گئے ہیں

انگریزی ادب کے مشہور ڈرامہ نگار ولیئم شیکسپیئر کی 400ویں برسی کے موقع پر ان کے 37 ڈراموں پر مختصر فلموں کی تیاری کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

اس مختصر ڈراموں کی خاص بات یہ ہے کہ اس کے لیے اداکاروں کو اپنے مکالمے فلمانے کے لیے دنیا بھر ان مقامات پر بھیجا گیا ہے جن کا ذکر ڈراموں میں کیا گیا ہے۔

لندن میں شیکسپیئر فیسٹیول کا آغاز

لندن اولمپکس کے موقع پر اردو میں شیکسپیئر

شیکسپیئر کے پرستار اب ڈراموں میں قلوپطرہ کو حقیقی مصر، جولیئس سیزر کو روم کے رومن فورم اور ہیملٹ کو ڈنمارک کے شہر ایلسی نور میں دیکھ سکیں گے۔

دس منٹ دورانیے کی یہ فلمیں 23 اور 24 اپریل سنہ 2016 کو لندن میں دریائے ٹیمز کے کنارے نمائش کے لیے پیش کی جائیں گی۔

منصوبے کا خیال پیش کرنے والے اور شیکسپیئر گلوب کے آرٹسٹک ہدایت کار ڈومینیک ڈرومگول کا کہنا ہے ’یہ دیکھنا ایک عظیم بات ہے کہ شیکسپیئر کو کس طرح بین الاقوامی سطح پر پذیرائی ملی ہے اور پوری دنیا نے انھیں کس طرح اپنایا ہے۔‘

اُن کا کہنا ہے کہ تمام فلمیں ہر ڈرامے کا ’مکمل خلاصہ‘ ہوں گی اور ان میں اُن لوگوں کے لیے ’مکمل اور جامع تعارف‘ پیش کیا جائے گا جو شیکسپیئر کے ڈراموں سے متعلق کچھ بھی نہیں جانتے۔

اگلے چھ ماہ کے دوران شیکسپیئر کے ڈراموں میں کام کرنے والے معروف اداکاروں کے ساتھ کم دورانیے کی فلموں کی عکس بندی کی جائے گی۔ تاہم اُن اداکاروں کے ناموں کا اعلان اب تک نہیں کیا گیا جو اپنے مکالمے ڈرامے کی مناسبت سے حقیقی مقامات پر فلم بند کرائیں گے۔

Image caption ناظرین ہیملٹ کو ڈنمارک کے شہر ایلسی نور میں دیکھ سکیں گے

اپریل میں شیکسپیئر کی برسی کے موقعے پر ویسٹ منسٹر سے لے کر ٹاور برج کے درمیان ایستادہ 37 بڑی سکرینوں پر اُن کی تمام فلمیں دکھائی جائیں گی۔

ڈرموگل کے مطابق: ’ہمارے خیال میں یہ ضروری تھا کیوں کہ یہ لندن کا مرکز تھا اور شیکسپیئر نے اپنا زیادہ تر کام یہیں کیا تھا اور پہلی مرتبہ وہ ڈرامے یہیں دیکھے گئے تھے۔‘

ان کے مطابق ’عوام کے پاس یہ اختیار ہو گا کہ وہ اُن کے انفرادی ڈرامے دیکھیں یا پھر مکمل کام دیکھ سکیں۔ یہ بہت شاندار ہوگا کہ وہ بیٹھ کر ہر ڈرامے پر بننے والی دس منٹ کی فلم دیکھیں لیکن میں یہ تصور نہیں کر سکتا کہ لوگ ایسا کریں گے۔‘

اس منصوبے کے لیے برٹش کونسل، لندن کے میئر اور ایک نامعلوم عطیہ کنندہ کی مدد سے گلوب کو پانچ لاکھ یورو دیے گئے ہیں۔

اُمید کی جا رہی ہے کہ 2016 میں یہ فلمیں برطانیہ بھر کے مختلف شہروں اور بین الاقوامی سطح پر بھی پیش کی جائیں گی۔

اسی بارے میں