جونی ڈیپ کی بیوی پر کتے سمگل کرنے کے مقدمے کی سماعت

تصویر کے کاپی رائٹ AP

ہالی وڈ کے مشہور اداکار جونی ڈیپ کی بیوی ایمبر ہرڈ پر غیر قانونی طور پر کتوں کو آسٹریلیا سمگل کرنے کے مقدمے کی سماعت کی پہلی تاریخ مقرر کر دی گئی ہے۔

جونی ڈیپ کی بیوی پر کتے سمگل کرنے کا الزام

جونی ڈیپ کی وینیسا سے علیحدگی

آسٹریلوی ریاست کوئنزلینڈ میں درج مقدمے کی پہلی سماعت 18 اپریل سنہ 2016 کو منعقد کی جائے گی۔

مقامی میڈیا کی جانب سے کیس کو ’وار آن ٹیریئر‘ کہا جا رہا ہے۔

اداکارہ ایمبر ہرڈ کے خلاف دو الزامات عائد کیے گئے ہیں جن میں آسٹریلیا میں عائد قرنطینہ کے قانون کی خلاف جان بوجھ کر ورزی کر کے ایک ممنوعہ چیز کو درآمد کرنا بھی شامل ہے۔

ایک عدالتی اہلکار نے خبرر رساں ادارے اے ایف پی سے کہا کہ مقدمے کی سماعت میں ایمبر کی شمولیت ضروری ہے۔

ایمبر اس وقت مشکل میں پڑیں جب وہ اپریل میں پسٹل اور بو نامی یورک شائر ٹیریئر نسل کے دو کتے لے کر حکام کو بتائے بغیر برسبین پہنچ گئیں۔

ملک میں بیماریاں کی آمد کو روکنے کے لیے آسٹریلیا نے سخت قوانین لاگو کیے ہیں جن کے تحت امریکہ سے آنے والے کتوں کو قرنطینہ میں 10 دن گزارنے ہوں گے۔

Image caption دونوں کتے جونی ڈیپ کے نجی طیارے کے ذریعے قوینز لینڈ میں پہنچے تھے جہاں مشہور اداکار پائریٹس آف دا کیریبئین فرنچائز کی پانچویں فلم کی شوٹنگ کر رہے تھے

یہ کیس دنیا کی توجہ کا مرکز تب بنا جب آسٹریلیا کے وزیر زراعت بارنبی جوئیس نے ’کتوں کو واپس امریکہ نہ بھیجنے‘ کی صورت میں انھیں مار دینے کی دھمکی دی تھی۔

بارنبی جوئیس نے مزید کہا کہ انھیں اس بات کی پروا نہیں تھی کہ جونی ڈیپ کو دنیا میں سب سے ’سیکسی انسان‘ ہونے کا درجہ دیا گیا ہے اور یہ کہ انھیں پھر بھی قرنطینہ کے قوانین پر عمل کرنا پڑے گا۔

دونوں کتے جونی ڈیپ کے نجی طیارے کے ذریعے کوئنز لینڈ میں پہنچے تھے جہاں مشہور اداکار پائریٹس آف دا کیریبئین فرنچائز کی پانچویں فلم کی شوٹنگ کر رہے تھے۔

ملک کی شہ سرخیوں پر کتوں کی خبر چھانے کے بعد انھیں جلد ہی آسٹریلیا سے باہر واپس امریکہ بھیج دیا گیا تھا۔

رواں سال جولائی میں ایمبر ہرڈ پر غیر قانونی طریقے سے کتوں کو آسٹریلیا لے جانے کے ضمن میں دو اور غلط کاغذات پیش کرنے پر ایک مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

درآمد کرنے کے مقدمات کے تحت ایمبر کو 48 ہزار پاؤنڈز جرمانہ اور دس سال جیل کی سزا ہو سکتی ہے جبکہ غلط کاغذات کے الزامات پر انھیں ایک سال جیل اور 4800 پاؤنڈز جرمانے کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

مئی میں پیش ہونے والے اس واقعے کے بعد ایمبر ہرڈ نے آسٹریلیا واپس کبھی نہیں آنے کی قسم اٹھائی تھی لیکن اس ماہ میں آنے والی اطلاعات کے مطابق انھوں نے کہا تھا کہ وہ ’آسٹریلیا کے قوانین کا احترام کرتی ہیں‘ اور ’ان معاملات کی سماعت میں شرکت کرنے کے لیے تیار ہیں۔‘

عدالت کی سماعت میں 12 عینی شاہدین گواہی دیں گے لیکن یہ واضح نہیں ہوا ہے کہ اگر جونی ڈیپ بھی ان میں شامل ہیں یا نہیں۔

اسی بارے میں