امریکی گلوکار کِرس براؤن پر خاتون سے مار پیٹ کا الزام

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption کِرس براؤن نے اقرار جُرم کیا تھا کہ انھوں نے اپنی گرل فرینڈ ریحانہ پر حملہ کیا، اُس کے بعد سے وہ دو مرتبہ آسٹریلیا کا دورہ کر چکے ہیں تاہم اب حکومت پر دباؤ ہے کہ ان کا ویزا منسوخ کردیا جائے

امریکی شہر لاس ویگاس کی پولیس گلوکار کرس براؤن کے خلاف لڑائی اور مارپیٹ کے الزامات کی تحقیقات کر رہی ہے۔

لاس ویگاس پولیس کے اہلکار جیف گڈون کے مطابق یہ واقعہ سنیچر کی شب پامز کیسینو ریزورٹ میں پیش آیا تھا۔

پولیس کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ جب ایک کمرے میں ایک خاتون نے براؤن کی تصویر کھینچنے کی کوشش کی تو جھگڑا ہوا جس کے دوران براؤن نے مبینہ طور پر خاتون کو مارا اور اس کا فون بھی اپنے پاس رکھ لیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اہلکار جب جائے وقوع پر پہنچے تو براؤن وہاں سے جا چکے تھے اور اس لیے ان سے اس وقت پوچھ گچھ نہیں کی جا سکی۔

لاس ویگاس پولیس کے مطابق براؤن کے خلاف چوری اور مار پیٹ کے الزامات کے تحت رپورٹ درج کی گئی ہے۔

براؤن کی تشہیری ایجنٹ نکول پرنا نے مذکورہ خاتون کے الزامات کو ’قطعی غلط‘ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ان الزامات میں کوئی سچائی نہیں اور یہ من گھڑت ہیں۔

خیال رہے کہ ماضی میں بھی کرس براؤن پرگھریلو تشدّد کے الزامات لگتے رہے ہیں۔

سنہ 2009 میں کِرس براؤن نے اعترافِ جُرم کیا تھا کہ انھوں نے اپنی گرل فرینڈ گلوکارہ ریہانا پر حملہ کیا تھا۔

اسی بارے میں