ڈیوڈ بوئی کا جسدِ خاکی نذرِ آتش

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption بوئی کے آخری البم کو ان کی لوحِ مزار سمجھا جا رہا ہے

اطلاعات کے مطابق برطانوی گلوکار ڈیوڈ بوئی کا جسدِ خاکی ان کی موت کے بعد جلد ہی نذرِ آتش کر دیا گیا ہے۔ اس دوران ان کا جنازہ نہیں ہوا کیوں کہ وہ اپنے آخری برسوں میں زیادہ تر الگ تھلگ رہنے کو ترجیح دیتے تھے۔

اخبار ڈیلی مرر نے لکھا ہے کہ ان کی وصیت کے مطابق ان کے عزیز یا دوست اس موقعے پر موجود نہیں تھے۔

گلوگار ڈیوڈ بوئی کے ایک تشہیری مشیر نے بی بی سی کو بتایا کہ وہ اس خبر کی تصدیق یا تردید نہیں کریں گے۔

بوئی اتوار کو 69 برس کی عمر میں انتقال کر گئے تھے۔

انھوں نے اپنی موت سے صرف دو روز قبل ’بلیک سٹار‘ کے نام سے ایک نیا البم جاری کیا تھا، جسے ان کا لوحِ مزار سمجھا جا رہا ہے۔

اس البم میں اس قسم کے گانے موجود ہیں: ’اوپر دیکھو، میں جنت میں ہوں۔‘ تاہم البم کے پروڈیوسر ٹونی وسکونٹی نے کہا کہ بوئی نے حالیہ ہفتوں میں پانچ نئے گانے لکھے اور گائے تھے۔

رولنگ سٹون میگزین سے بات کرتے ہوئے وسکونٹی نے کہا کہ بوئی نے انھیں ایک ہفتہ قبل فون کر کے کہا وہ ’بلیک سٹار‘ کے بعد ایک اور البم بھی جاری کرنا چاہتے ہیں۔

’میرا خیال تھا، اور ان کا اپنا بھی یہی خیال تھا کہ ان کے پاس مزید چند مہینے ہوں گے۔ (لیکن) ان کا انجام بہت جلد آ گیا۔ وہ اس فون کال کے بعد بہت زیادہ بیمار ہو گئے ہوں گے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption بوئی کے آخری البم کو ان کا سنگِ مزار سمجھا جا رہا ہے۔ اس البم میں ایک نغمہ ہے: ’اوپر دیکھو، میں جنت میں ہوں‘

وسکونٹی بوئی کے اعزاز میں نیویارک کے کارنیگی ہال میں مارچ میں منعقد ہونے والے ایک کنسرٹ میں موسیقار کے طور پر پرفارم کریں گے۔

اس کے علاوہ اگلے ماہ ہونے والے برٹ ایوارڈز میں بھی بوئی کی ’غیرمعمولی زندگی اور ہمارے دور کے عظیم ترین فنکاروں میں سے ایک کو‘ خراجِ تحسین پیش کیا جائے گا۔

اسی دوران بوئی کے موت کی خبر آنے کے بعد ان کے البم بلیک سٹار کی فروخت میں تیزی آ گئی ہے۔ توقع ہے کہ یہ البم برطانیہ میں بھی پہلے نمبر پر آ جائے گا، جب کہ امکان ہے کہ ان کے 13 سابقہ البم بھی ٹاپ 100 کی فہرست میں جگہ بنا لیں گے۔

اسی بارے میں