’غیرت کے نام پر قتل، غیرت نہیں ایک سنگین جرم ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ PID
Image caption نواز شریف نے کہا کہ شرمین عبید چنائے نے غیرت کے نام پر قتل کے موضوع پر فلم بنا کر ایک چیلنجنگ موضوع کا انتخاب کیا ہے

پاکستان کے وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ غیرت کے نام پر کسی کو قتل کرنا غیرت نہیں بلکہ ایک سنگین جرم ہے۔

انھوں نے یہ بات وزیرِ اعظم ہاؤس میں آسکر ایوارڈ یافتہ ہدایتکارہ شرمین عبید چنائے کی مختصر دورانیے کی دستاویزی فلم ’آ گرل ان دا ریور‘ کے پریمیئر کے موقع پر اپنے خطاب میں کہی۔

سنہ 2012 میں دستاویزی فلم ’سیونگ فیس‘ کے لیے آسکر جیتنے والی شرمین کی یہ فلم بھی آسکرز کے لیے نامزد کی گئی ہے۔

اس فلم کی نامزدگی کے بعد وزیرِ اعظم پاکستان نے اس کا پریمیئر وزیرِ اعظم ہاؤس میں کروانے کا اعلان کیا تھا۔
تصویر کے کاپی رائٹ PID
Image caption پریمیئر میں وزیرِ اعظم کے علاوہ ملک کی دیگر اعلیٰ شخصیات نے بھی شرکت کی

سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق پیر کو فلم کے پریمیئر کے موقع پر خطاب میں وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ غیرت کے نام پر قتل اور اس جیسی دیگر روایات کو اسلام سمیت کسی بھی مذہب میں قابلِ قبول نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اسلام میں مردوں اور خواتین کو یکساں حقوق حاصل ہیں اور حکومت ہر سطح پر خواتین سے امتیازی سلوک کے خاتمے کے لیے ہر ممکن اقدام کرے گی۔

نواز شریف نے کہا کہ شرمین عبید چنائے نے غیرت کے نام پر قتل کے موضوع پر فلم بنا کر ایک ایسے چیلنجنگ موضوع کا انتخاب کیا ہے جس نے معاشرے کے تاریک پہلوؤں پرروشنی ڈالی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’غیرت کے نام پر قتل، غیرت نہیں بلکہ سنگین جرم ہے اور اس قابل نفرت اقدام کے تدارک کے لیے موجودہ حکومت ہر ممکن کوشش کرے گی۔

اسی بارے میں