انڈیا میں فلم ’جنگل بک‘ کو بچّے تنہا نہیں دیکھ سکتے

Image caption سینسر بورڈ کے اس فیصلے پر بہت سے لوگوں نے ناراضی کا اظہار کیا ہے۔ بہت سے لوگوں نے سوشل میڈیا کی سائٹز پر بورڈ کے اس فیصلے کا مذاق اڑایا ہے

انڈیا میں سینسرز بورڈ نے ڈزنی کی فلم ’جنگل بک‘ کو یو/ اے سرٹیفیکٹ جاری کیا ہے جس کا مطلب یہ ہے کہ بچّے یہ فلم کسی بالغ شخص کی موجودگی کے بغیر نہیں دیکھ سکتے۔

بورڈ کے اس اقدام پر کافی نکتہ چینی ہورہی ہے کیونکہ یہ فلم تو بچوں کو ہی ذہن میں رکھ کر بنائی گئی ہے اور آخر اس میں ایسا کیا ہے کہ اسے یو اے سرٹیفیکٹ دیا گيا۔

لیکن سینسرز بورڈ کے سربراہ پہلاج نہلانی نے ایک انڈین اخبار کو اس بارے میں وضاحت پیش کرتے ہوئے کہا کہ ایسا اس لیے کیا گیا کیونکہ فلم کچھ زیادہ ہی ڈراؤنی ہے۔

جنگل بک سنہ 1967 میں بنائي گئی اینیمیٹیڈ فلم کی ریمیک ہے جسے کمپیوٹر کی مدد سے تھری ڈی میں نئے سرے سے تیار کیا گیا ہے۔ یہ فلم روڈیارڈ کپلنگ کی کتاب پر پر مبنی ہے۔

فلم سے متعلق تجزیاتی رپورٹوں میں اس کی کافی تعریف کی گئی ہے اور بھارت میں یہ فلم 8 اپریل کو ریلیز ہورہی ہے۔

پہلاج نہلانی نے ایک بھارتی اخبار کو بتایا کہ فلم کو یو/ اے سرٹیفیکٹ دینے کا فیصلہ اس لیے کیا گیا کیونکہ اس کے ’تھری ڈی ایفکٹز اتنے زیادہ خوف ناک ہیں کہ ایسا لگتا ہے جیسے جانور ناظرین پر ہی کودے پڑ رہے ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Disney PR
Image caption چونکہ امریکہ میں اس فلم کے تعلق سے والدین کو بعض ہدایات جاری کی گئی تھیں اسی لیے انڈیا میں بھی اس پر بحث شروع ہوئی

لیکن فلم کےموسیقار وشال بھاردواج نے ایک کانفرنس میں میں کہا کہ فلم میں ایسا کچھ بھی نہیں ہے جس کی وجہ سے اسے یو / اے سرٹیکفٹ دیا جاتا۔

ان کا کہنا تھا ’یہ بہت ہی خوبصورت فلم ہے۔ اس میں ایسا کچھ بھی نہیں ہے جس سے بچے ڈر جائیں گے لیکن ہمیں اس حقیقت کو تو تسلیم کرنا چاہیے کہ یہ وقت ہی ایسا ہے۔‘

سینسر بورڈ کے اس فیصلے پر بہت سے لوگوں نے ناراضی کا اظہار کیا ہے۔ کئی افراد نے سوشل میڈیا کی سائٹز پر بورڈ کے اس فیصلے کا مذاق اڑایا ہے۔

ایک ٹوئٹر صارف رے بین لکھتی ہیں ’پہلاج نہلانی نے جنگل بک کو یو اے سرٹیفیکٹ دیا ہے۔ ظاہر ہے جنگل کے ننگے جانوروں نے انھیں ناراض کر دیا ہوگا۔‘

چونکہ امریکہ میں اس فلم کے تعلق سے والدین کو بعض ہدایات جاری کی گئی تھیں اسی لیے انڈیا میں بھی اس پر بحث شروع ہوئی اور بعض افراد نے بورڈ کے فیصلے کا دفاع کیا ہے۔

اسی بارے میں