’آخر ہر چیز کا نام گاندھیوں پر ہی کیوں؟‘

Image caption رشی کپور اس سے قبل بھی اپنے متنازع بیان دے چکے ہیں

بالی وڈ کے معروف اداکار رشی کپور نے سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پرکانگریس اور نہرو -گاندھی خاندان پر سخت تنقید کی ہے۔

انھوں نے ملک بھر میں مختلف سڑکوں اور عمارتوں کے نام گاندھی نہرو خاندان کے افراد کے نام پر رکھنے پر سخت اعتراض کیا ہے۔

رشی کپور نے اپنے آفیشیئل ٹوئٹر اکاؤنٹ پر لکھا: ’کانگریس نے گاندھی خاندان کے نام پر جن املاک کا نام رکھا ہے انھیں بدلا جائے۔ باندرا ورلي سی لنک کا نام لتا منگیشکر یا جے آر ڈی ٹاٹا لنک روڈ رکھا جائے۔ باپ کا مال سمجھ رکھا تھا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ twitter
Image caption رشی کپور کے ٹویٹس

انھوں نے اس سلسلے میں کئی ٹویٹ کیے۔ ایک دوسرے ٹویٹ میں انھوں نے یہ سوال کیا کہ ’اگر دہلی کی سڑکوں کا نام تبدیل کیا جا سکتا ہے تو کانگریسی رہنماؤں کے نام سے موسوم ملکی املاک کے نام کیوں نہیں بدلے جا سکتے ہیں؟ چندی گڑھ میں تھا وہاں بھی راجیو گاندھی کے نام پر املاک کا نام؟ سوچو؟ کیوں؟‘

’ہمیں اپنے ملک میں اہم مقامات کے نام ان لوگوں کے نام پر رکھنے چاہییں جنھوں نے معاشرے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ ہر چیز گاندھی کے نام؟ میں متفق نہیں ہوں۔ سوچنا لوگو!‘

انھوں نے مزید لکھا: ’فلم سٹی کا نام دلیپ کمار، دیو آنند، اشوک کمار یا امیتابھ بچن کے نام پر کیوں نہیں ہونا چاہیے؟ راجیو گاندھی انڈسٹریز کیا ہوتا ہے؟ سوچو دوستو!‘

تصویر کے کاپی رائٹ film pr
Image caption رشی کپور اپنے زمانے کے کامیاب اداکار رہے ہیں

ایک ٹویٹ میں انھوں نے لکھا: ’اندرا گاندھی انٹرنیشنل ایئر پورٹ کیوں؟ مہاتما گاندھی، بھگت سنگھ یا امبیڈکر کے نام پر کیوں نہیں؟ بات تھوڑی سطحی ہو جائے گی لیکن رشی کپور کے نام پر کیوں نہیں؟

’ذرا غور کریں کہ ہمارے ملک کے مقامات محمد رفیع، مکیش، منا ڈے، کشور کمار کے نام پر ہوں۔ یہ صرف ایک مشورہ ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ twitter
Image caption رشی کپور نے اس کے متعلق متعدد ٹویٹس کیے

گاندھی کے نام پر ان کے ٹویٹ کے بعد ان کی حمایت اور اور مخالفت میں ٹویٹ آئے ہیں اور انڈیا میں #گاندھیز ٹرینڈ کرنے لگا ہے۔

ایک شخص نے لکھا کہ ’صرف کانگریس کو نشانہ بنانا درست نہیں ہے۔‘

ٹوئٹر پر اپنے تبصروں کے لیے رشی کپور کئی بار بحث کا موضوع رہے ہیں۔ بیف کے متعلق ان کے کئے تبصرے متنازع رہے اور ان پر خاصا احتجاج بھی ہوا تھا۔