میرے پاپا شرابی تھے لیکن اب نہیں: عالیہ بھٹ

Image caption فلم ’اڑتا پنجاب‘میں عالیہ ایک بہاری لڑکی کے کردار میں ہیں

اداکارہ عالیہ بھٹ کا کہنا ہے کہ ان کے والد اور فلمساز اور ڈائریکٹر مہیش بھٹ شرابی تھے، تاہم گزشتہ 27 سال سے انھوں نے شراب کو ہاتھ بھی نہیں لگایا ہے۔

عالیہ شراب اور نشے کے کاروبار پر بنائی گئی ابھیشیک چوبے کی فلم ’ اڑتا پنجاب‘ میں اہم کردار ادا کر رہی ہیں۔

انھوں نے فلم کے بارے میں بی بی سی سے بات کرتےہوئے کہا کہ ’کلب ہو یا پارٹی، ہر جگہ نوجوان منشیات لیتے دکھائی دیتے ہیں۔اس وقت منشیات نوجوانوں میں بہت مقبول ہے اور میں ایسے لوگوں سے ملی بھی ہوں۔‘

Image caption عالیہ کا کہنا ہے کہ اس وقت نوجوانوں میں منشیات بہت عام ہے

کیا کبھی عالیہ نے بھی ڈرگز لیے ہیں؟ اس کے جواب میں وہ کہتی ہیں، ’میں نے کبھی ڈرگز نہیں لیے۔‘

عالیہ کا کہنا تھا اس بارے میں ان کے پاپا اور مشہور ہدایت کار مہیش بھٹ ان کے لیے بڑی تحریک بنے۔ انھوں نے کہا ’پہلے میرے باپ شرابی تھے، لیکن گزشتہ 27 سال سے انھوں نے شراب کو ہاتھ بھی نہیں لگایا۔‘

فلم ’اڑتا پنجاب‘میں عالیہ ایک بہاری لڑکی کے کردار میں ہیں۔فلم کا ٹریلر لانچ ہونے کے بعد عالیہ کو تعریف کے ساتھ ساتھ تنقید کا سامنا بھی کرنا پڑا۔

Image caption فلم اڑتا پنجاب میں عالیہ ایک بہادتر لڑکی کے کردار میں ہیں

عالیہ کہتی ہیں، ’صرف فلم کے ٹریلر کو دیکھ کر کردار پر تبصرہ کرنا ٹھیک نہیں لیکن سب کو خوش کرنا مشکل ہے‘۔

وہیں سوشل میڈیا پر فعال رہنے والی عالیہ کو لگتا ہے کہ اب سوشل میڈیا ’اوور‘ ہو گیا ہے۔

Image caption فلم میں کرینہ کپور اور شاہد کپور بطی اہم کردار میں ہیں

وہ کہتی ہیں، ’ہر دن کچھ بھی ٹرینڈ ہوتا رہتا ہے۔ ’اڑتا پنجاب‘ کے بارے میں عالیہ کہتی ہیں کہ ملک کے لوگوں کو منشیات سے ہوشیار کرنا انتہائی ضروری ہے۔

اس فلم میں عالیہ بھٹ کے ساتھ شاہد کپور اور کرینہ کپور بھی اہم کردار ادا کر رہی ہیں۔

یہ فلم 17 جون کو ریلیز ہوگی۔

اسی بارے میں