’آئرن مین‘ کی جگہ اب ’آئرن لیڈی‘

تصویر کے کاپی رائٹ MARVELJEFF DEKAL

ایک 15 سالہ سیاہ فام لڑکی جلد ہی امریکی کہانیوں کے مشہور کردار ’آئرن مین‘ کا ’باڈی آرمر‘ یا زرہ بکتر زیب تن کیے ہوئے پردہ سکرین پر نمودار ہوں گی۔

غیر معمولی یا مافوق الفترت قوتوں اور صلاحیتوں کے مالک فرضی کرداروں کی کہانیوں یا کامکس پر فلمیں بنانے والی امریکی کمپنی ’مارول‘ نے کہا ہے کہ ’سول وار II‘ سیریز کی نئی قسط میں آئرن مین ٹونی سٹارک اپنے فرائض سے دستبردار ہو جاتے ہیں اور ان کی جگہ نوجوان سیاہ فام ری ویلیم لے لیں گی۔

ری ویلیم کی پیدائش امریکی شہر شکاگو میں ہوئی تھی، وہ عالمی شہرت کے حامل تعلیمی ادارے ایم آئی ٹی میں سائنس کی تعلیم حاصل کر رہی ہیں اور انھوں نے اس سال کے شروع میں اداکاری شروع کی ہے۔

٭ آئرن مین 3 کی افتتاحی تقریب مؤخر

تصویر کے کاپی رائٹ AP

اس خبر کا زبردست رد عمل سامنے آیا ہے اور لوگوں نے اس خبر کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ ہے یہ تنوع کو فروغ دینے کے لیے خوش آئند اقدام ہے۔

آئرن مین کے مصنف برائن مائیکل بینڈس نے ٹائم کو بتایا کہ انھیں یہ خیال شکاگو میں افراتفری اور تشدد کا شہر میں قیام کرنے کے دوران مشاہدہ کرنے سے آیا۔

انھوں نے کہا کہ اس ذہین اور غم زدہ نوجوان لڑکی کی کہانی جو مایوس ہو کر اپنی زندگی ختم کر سکتی تھی لیکن وہ کالج چلی جاتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ اس لڑکی کی سرگزشت سے متاثر ہو کر انھوں نے یہ کہانی لکھی۔

انھوں نے کہا کہ ’مجھے خیال آیا کہ جدید دور کے سپر ہیرو یا سپر ہیروئن کی کہانی ہے۔‘

آئرن مین کا کردار پہلی مرتبہ 1963 میں تخلیق کیا گیا تھا۔ کہانی میں ایک ارب پتی شخص ٹونی سٹارک جدید ترین ہتھیار بناتا ہے۔

اسی بارے میں