’عامر کو استاد، آپ کو ماہر نفسیات درکار‘

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption انڈیا کے وزیر دفاع نے بغیر نام لیے اداکار عامر خان کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا

انڈیا میں اپنے متنازع بیانات کے لیے معروف بی جے پی کے رہنما سبرامنیم سوامی نے بظاہر عامر خان کے متعلق بیان پر وزیر دفاع منوہر پاریکر کا دفاع کیا ہے۔

ایک ٹویٹ میں سوامی نے کہا کہ ’عامر کے متعلق پاریکر کے بیان پر اتنا شور شرابہ کیوں ہے؟ اگر عامر اس بات سے نابلد ہیں کہ جنم بھومی (وطن) سے محبت غیر مشروط ہوتی ہے، تو انھیں ایک استاد کی ضرورت ہے۔‘

دراصل وزیر دفاع منوہر پاریکر نے گذشتہ دنوں عامر خان کے نام کا ذکر کیے بغیر کہا تھا کہ ملک کے خلاف بولنے والے کسی بھی شخص کو سبق سکھانا چاہیے۔

گذشتہ سال نومبر میں عامر خان نے انڈیا عدم برداشت کے بڑھتے ہوئے رجحانات کے پیش نظر اپنے ’عدم تحفظ کے احساس‘ کی بات کی تھی اور بتایا تھا کہ ان کی اہلیہ کرن راؤ انڈیا میں اپنے بچوں کے مستقبل کے بارے میں فکر مند ہیں۔

اب سبرامنیم سوامی نے منوہر پاریکر کا دفاع کرتے ہوئے عامر خان کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ twitter
Image caption انشو موہن کا ٹویٹ

ان کے اس ٹویٹ پر ملے جلے رد عمل سامنے آئے ہیں۔ بعض سوامی کے ُسر میں ُسر ملا رہے ہیں، تو بہت سے لوگ ان کے مخالف ہیں اور بعض کا کہنا ہے کہ سوامی نفرت پھیلا رہے ہیں۔

سبيہ ساچي داس نے ٹوئٹر ہینڈل Sabya1024@ سے لکھا ہے: ’بہت صحیح کہا آپ نے ڈاکٹر سوامی، اظہار رائے کی آزادی کے زیادہ استعمال پر حکومت کو روک لگانی چاہیے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ afp pti
Image caption عامر خان نے تو کوئی جواب نہیں دیا لیکن بڑی تعداد میں لوگ ان کی حمایت میں نظر آئے

اس کے جواب میں سوامی نے لکھا: ’ملک کی سالمیت برقرار رکھنے کے لیے آئین کے تحت ملنے والے تمام بنیادی حقوق پر بھی معقول پابندی لگائی جا سکتی ہے۔‘

لیکن انشو موہن نے ٹوئٹر ہینڈلmohananshu@ سے لکھا: ’عامر خان آپ سے زیادہ اپنے وطن سے محبت کرتے ہیں۔ آپ تو امریکہ چلے گئے تھے۔ عامر لوگوں کو سماجی مسائل کے بارے میں بتاتے ہیں۔ آپ کی طرح نہیں جو صرف نفرت سکھاتے ہیں۔‘

انوبھاب داس siputri66@ نے لکھا: ’ہر کوئی اپنی وطن سے محبت کرتا ہے۔ یہ ہماری سرشت میں ہیں۔ وہ تو بس معاشرے کو آئینہ دکھا رہے تھے۔‘

رویندر بھٹناگر نے ٹوئٹر ہینڈلCHITRANSHBANDHU سے لکھا: ’جناب، ملک کے وزیر دفاع سے یہ توقع ہے کہ وہ چینی دراندازی اور پاکستان پر بولیں گے! عامر خان کے لیے تو گلی کے رضاکار (آر ایس ایس) ہی کافی ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ twitter
Image caption اس ٹویٹ کو بار بار ری ٹویٹ کیا گيا اور اس کا جواب دیا گيا

ترون کرشن krishnatarun03@ لکھتے ہیں: ’سبرامنیم سوامی، لگتا ہے آپ کانگریس کے ایجنٹ ہیں جو بی جے پی کا نقصان کرنے کے لیے وہاں بھیجے گئے ہیں۔‘

Gangwal123@ نے لکھا: ’سبرامنیم سوامی۔ عامر خان کو اتنی اہمیت دینے کی ضرورت نہیں. بھارت کی ایک بڑی آبادی نے پہلے ہی فیصلہ کر لیا ہے کہ وہ دنگل نہیں دیکھیں گے۔‘

رماناتھ کرشنن نے ٹوئٹر ہینڈل krishnan201617@ سے لکھا: ’بیرونی طاقتوں سے ملک کی حفاظت کرنے کے بجائے، وہ اپنے ہی شہریوں کو ڈرا رہے ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ twitter
Image caption روندر بھٹناگر کا ٹویٹ

گورو مشرا نے ٹوئٹر ہینڈلgaurav_k_mishra@ سے لکھا: ’وزیر دفاع کو عہدے کے وقار پتہ نہیں تو استعفیٰ دے کر سڑک پر غنڈہ گردی کریں۔‘

sabkaguru1947@ نے لکھا: سوامی جی، عامر کو ٹیچر کی اور آپ کو ماہر نفسیات کی ضرورت ہے۔‘

اسی بارے میں