’بی بی سی وزیر اعظم سے زیادہ کمانے والوں کے نام ظاہر کرے‘

تصویر کے کاپی رائٹ bbc

برطانوی پارلیمان کی ایک کمیٹی نے کہا ہے کہ بی بی سی کو اپنے ان اینکرز اور فنکاروں کی شناخت ظاہر کرنی چاہیے جو وزیر اعظم سے بھی زیادہ کماتے ہیں۔

بی بی سی ان افراد کی شناخت عام کرے گی جو سالانہ ساڑھے چار لاکھ پاؤنڈ سے زیادہ کماتے ہیں۔

لیکن دارالعوام کی ثقافت، میڈیا اور کھیلوں کی کمیٹی کا کہنا ہے کہ سالانہ طور پر 143 ہزار پاؤنڈ کمانے والے لوگوں کی شناخت ظاہر کرنے میں کوئی مضحکہ نہیں ہے۔

بی بی بی کا کہنا ہے کہ ان لوگوں کی شناخت ظاہر کرنے سے دیگر تجارتی براڈکاسٹرز بی بی سی کے سٹارز کو اپنی طرف کھینچنے کی کوشش کریں گے جو ’لائسنس فی دینے والوں کے مفاد میں نہیں ہوگا‘۔

اس وقت بی بی سی صرف ان ملازمین کی تنخواہیں ظاہر کرتا ہے جو سالانہ ڈیڑھ لاکھ پاؤنڈ سے زیادہ کماتے ہیں۔

مئی میں برطانوی حکومت نے ایک دستاویز شائع کیا تھا جس میں بی بی سی کے مستقبل کے بارے میں کہا گیا تھا کہ ساڑھے چار لاکھ پاؤنڈ سے زیادہ کمانے والے فنکار یا اینکروں کی شناخت ظاہر کرنی چاہیے جن میں مشہور فنکار کرس ایونز، گیری لنیکر اور گریہم نورٹن شامل ہیں۔

سلیکشن کمیٹی کے چیئرمین اور برطانیہ کی کنزرویٹو پارٹی کے رکن پارلیمنٹ ڈیمین کولنز کا کہنا تھا کہ ’ایجنٹس، مینیجرز اور ہیڈ ہنٹرز کی طرح بہت لوگوں کو مختلف فنکاروں کی تنخواہوں کی تفصیلات معلوم ہوں گی۔‘

انھوں نے یہ بھی کہا کہ وزیر اعظم سے زیادہ کمانے والے لوگ جو عوامی اداروں میں کام کرتے ہیں ان کی شناخت ظاہر کرنا ایک عام عمل ہے۔

اس کے رد عمل میں بی بی سی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اس نے ’سینیئر مینیجرز کی ڈیڑھ لاکھ پاؤنڈ کمانے والوں کے نام ظاہر کرنے سے شفافیت کی مثال قائم کی ہے۔‘

اسی بارے میں