’فلم کی وجہ سے ذاتی تعلقات بگاڑنا بیوقوفی ہوگی‘

تصویر کے کاپی رائٹ Hyper PR and Ritik
Image caption اکشے کمار کی فلم رستم ریتک روشن کی موہنجودڑو کے مقابلے میں کہیں زیادہ کامیاب رہی ہے

بالی وڈ فلم ’رستم‘ کی کاميابي کے بعد اکشے کمار کو مبارکباد دینے والوں کا تانتا لگا ہوا ہے لیکن انھیں انتظار ہے ریتک روشن کی مبارکباد کا، جن کی فلم ’موہنجودڑو‘ باکس آفس پر ’رستم‘ کو زیادہ چیلینج نہیں کر پائی ہے۔

چار دن میں 50 کروڑ روپے کا کاروبار کرنے والی ’رستم‘ نے آشوتوش گواریگر جیسے ہدایتکار اور فلمساز کی فلم کو توقعات کے برعکس بڑا جھٹکا دیا ہے۔

’موہنجودڑو‘ باکس آفس پر اب تک 30 کروڑ روپے کمانے میں کامیاب رہی ہے جو کہ اس بڑے بجٹ کی فلم کے لیے ایک اچھا آغاز نہیں۔

رستم کی کامیابی کے بعد ریتک سے تعلقات پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے اکشے نے کہا کہ ’فلموں کی وجہ سے ذاتی تعلقات کو بگاڑنا بیوقوفی ہوگی۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ’فلمیں تو آتی جاتی رہتی ہیں لیکن فلموں کے درمیان تعلقات کو لانا ٹھیک نہیں کیونکہ پیشہ ورانہ اور ذاتی تعلقات اپنی اپنی جگہ ہوتے ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Hyper PR
Image caption رستم نے ریلیز کے ابتدائی چار دن میں 50 کروڑ روپے کا کاروبار کر لیا ہے

اکشے کا یہ بھی کہنا تھا کہ ’ریتک اور میں آج بھی اچھے پڑوسی کی طرح ہی ہیں۔ ایک دوسرے سے باتیں کرتے ہیں اور کبھی کبھار ساتھ میں کھانا بھی کھا لیتے ہیں۔‘

تاہم ریتک نے ابھی تک رستم کی کامیابی پر اکشے کو مبارکباد نہیں دی ہے۔

اکشے کا خیال ہے کہ ’فلموں میں کامیابی تو قسمت کا کھیل ہے، اس لیے انڈسٹری میں کوئی کامیابی کو سنجیدگی سے نہ لے، کیونکہ وہ کسی سے بندھ كر نہیں رہتی۔ آج میرے حصے میں ہے تو کل کسی اور کے حصے میں آئےگی۔‘

ان کا کہنا تھا کہ وہ دعاگو ہیں کہ انڈسٹری کی تمام فلمیں باکس آفس پر ہٹ ہوں تاکہ اداکار اور انڈسٹری ایسے ہی قائم رہے۔

اسی بارے میں