جینیفر کمائی میں پہلے اور دیپکا دسویں نمبر پر

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption جینیفر لارنس لگاتار فوربز کی اس فہرست میں پہلے نمبر پر آئی ہیں

دنیا کی سب سے زیادہ کمانے والی دس اداکاراؤں میں انڈیا سے تعلق رکھنے والی بالی وڈ کی اداکارہ دیپکا پاڈوکون بھی شامل ہو گئی ہیں۔

یہ فہرست امریکی مالیاتی جریدے فوربز نے جاری کی ہے جس میں آسکر انعام یافتہ جینیفر لارنس لگاتار دوسری بار دنیا کی سب سے زیادہ کمانے والی اداکارہ قرار پائی ہیں۔

فوبز نے ٹیکس کی ادائیگی سے قبل جینیفر لارنس کی کمائی کا تخمینہ چار کروڑ 60 لاکھ امریکی ڈالر لگایا ہے۔

گذشتہ سال کے مقابلے رواں سال جینیفر کی آمدنی میں کمی آئي ہے مگر پھر بھی وہ پہلے نمبر پر ہیں۔

جینیفر لارنس دوسرے نمبر پر کمائی کرنے والی اداکارہ ملیسا میکارتھی سے بہت آگے ہیں جبکہ دیپکا اس فہرست میں ہالی وڈ سے باہر کی واحد اداکارہ ہیں اور وہ دسویں نمبر پر ہیں۔

26 سالہ اداکارہ لارنس کی کمائی کا بڑا سبب ’ہنگر گیمز‘ کی بدولت ہے جس نے 65 کروڑ امریکی ڈالر کی کمائی کی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption دیپکا کی کمائی زیادہ تر ان کے انڈورسمنٹ کی مرہون منت ہے

اس میں ان کی آنے والی سپیس تھرلر ’پیسنجر‘ کی بھی اچھی کمائی شامل ہے۔

یہ تخمینہ یکم جون سنہ 2015 کے بعد 12 مہینوں کی کمائی پر مبنی ہے۔

اداکاروں کی کمائی کا تخمینہ جمعرات کو شائع کیا جائے گا تاہم تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ خواتین اور مردوں کی کمائی میں واضح فرق نظر آئے گا۔

سنہ 2014 میں سونی پکچرز کے ای میل چوری ہونے کے سبب مردوں اور خواتین کے محنتانے میں بڑے فرق کی بات سامنے آئی تھی اور یہ باتیں شہ سرخیوں میں آئی تھیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption سکارلٹ جانسن سرکردہ اداکارہ ہیں

45 سالہ میکارتھی نے گذشتہ سال کے مقابل ایک کروڑ ڈالر کی زیادہ کمائی کی ہے اور اس کا سبب ان کی فلم ’گھوسٹ بسٹرز‘ ہے جس میں انھیں آٹھ ہندسوں میں کمائی ہوئی ہے۔

سکارلٹ جوہانسن ڈھائی کروڑ کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہیں جبکہ جییفر اینسٹون کی کمائی دو کروڑ دس لاکھ ڈالر رہی۔ چین کی اداکارہ فان بنگبنگ پانچویں نمبر پر ہیں۔

دیپکا پاڈوکون کی کمائی کا تخمینہ ایک کروڑ امریکی ڈالر لگایا گیا ہے۔ فوربز نے بتایا ہے کہ وہ اپنی بالی وڈ فلموں سے اداکاروں کے مقابلے بہت کم کماتی ہیں لیکن ان کے پاس ایک درجن سے زیادہ مہنگے اشتہارات ہیں اور یہ ان کے اس فہرست میں آنے کا بڑا سبب ہیں۔

اسی بارے میں