ایمی ایوارڈز میں’گیم آف تھرونز‘ کا نیا ریکارڈ

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption گیم آف تھرونز نے رواں ایمی ایوارڈز میں 12 درجوں میں کامیابی حاصل کی ہے

ڈرامہ سیریز ’گیم آف تھرونز‘ نے سب سے زیادہ ایمی ایوارڈ حاصل کرنے کا نیا ریکارڈ قائم کر دیا ہے۔

ایچ بی او کی اس اساطیری ڈرامہ سیریز نے امریکی شہر لاس اینجلس میں منعقدہ 68 ویں ایمی ایوارڈز میں بہترین ٹی وی ڈرامہ سیریز سمیت تین ایوارڈ حاصل کیے۔

اس طرح اسے ملنے والے ایمی ایوارڈز کی کل تعداد 38 تک پہنچ گئی۔ اس سے قبل سب سے زیادہ ایمی ایوارڈ جیتنے کا اعزاز ڈرامہ سیریز فریزیئر کے پاس تھا جو 37 مختلف ایوارڈز جیت چکی ہے۔

’گیم آف تھرونز‘ ایک افسانوی سیریز ہے جس میں اداکاروں کو ایک خیالی دنیا میں قوت و اقتدار کے لیے ایک دوسرے سے برسر پیکار دکھایا گیا ہے جس میں بے رحمی ہے، طلسم ہے اور ڈریگنز بھی ہیں۔

اتوار کو مائیکروسوفٹ تھیٹر میں منعقدہ ایک رنگا رنگ تقریب کے دوران ٹیٹیانا میسلانی کو ’اورفن بلیک‘ میں اداکاری کے لیے بہترین اداکارہ کا ایوارڈ دیا گيا جبکہ رامی ملک کو ’مسٹر روبوٹ‘ میں اداکاری کے لیے بہترین اداکار کے ایوارڈ سے نوازا گیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption جولیا کو تیسری بار ٹی وی سیریز ویپ کے لیے ایوارڈ ملا

میسلانی کا یہ پہلا ایمی ایوارڈ ہے۔ وہ بی بی سی امریکہ کی اس سیریز میں مختلف کردار نبھاتی ہیں اور ان کے تمام کردار ایک ہی خاتون کا کلون ہیں۔

میسلانی کو ان کے کرداروں کے تنوع کے لیے پذیرائی حاصل ہوئی ہے اور انھوں نے شو کے چار سیزنز میں ایک ماں سے لے کر ایک سفاک قاتل تک مختلف کردار ادا کیے ہیں۔

’ویپ‘ کو بہترین کامیڈی سیریز کا ایوارڈ دیا گیا۔ اس ٹی وی سیریز کی اداکارہ جولیا لوئی ڈریفس کو سیریز میں اداکاری کے لیے کامیڈی میں بہترین اداکارہ کا ایوارڈ ملا جبکہ کامیڈی میں بہترین اداکار کا انعام ’ٹرانسپیرنٹ‘ کے لیے جیفری ٹیمبر کو دیا گیا۔

ایچ بی او کی سیریز ’ویپ‘ کو بھی دوسری بار ایوارڈ ملا ہے۔ اس سیریز میں جولیا لوئی افسانوی امریکی صدر کا کردار ادا کر رہی ہیں جو مسند صدارت پر جلوہ افروز ہوتی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اس موقعے پر بالی وڈ اداکارہ پرینکا چوپڑہ بھی موجود تھیں

’بلڈ لائن‘ کے لیے بن مینڈلسن نے بہترین معاون اداکار کا ایوارڈ حاصل کیا ہے جبکہ بہترین معاون اداکارہ کا ایوارڈ میگی سمتھ کو ’ڈاؤن ٹاؤن ایبی‘ کے لیے دیا گيا ہے۔

خیال رہے کہ یہ سمتھ کا چوتھا ایمی ایوراڈ ہے جبکہ انھیں تیسری بار اسی سیریز کے لیے ایوارڈ دیا گيا ہے۔ وہ ایوارڈ لینے نہیں آئیں اور شو کے میزبان نے مذاق میں کہا کہ ’ایوارڈ کے لیے ہر ایک کا یہاں ہونا ضروری ہے۔‘

’ٹرانسپیرنٹ‘ کی خالق جل سولووے نے رپبلکن امیداوار ڈونلڈ ٹرمپ کا مقابلہ ہٹلر سے کیا اور کہا کہ ’وہ سب سے خطرناک عفریت میں سے ایک ہیں۔‘

جل سولووے نے بہترین ہدایت کار کا انعام جیتنے کے بعد یہ بات سٹیج سے باہر میڈیا سے کہی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اداکارہ گیبی اور ہدایت کار جل سولووے کو یہاں دیکھا جا سکتا ہے

منی سیریز یا فلم کے لیے ’امریکی کرائم سٹوری: دا پیپل ورسز او جے سمپسن‘ کو ایوارڈ دیا گيا۔

’شرلاک: دا ابومینیبل برائڈ (ماسٹرپیس)‘ کو بہترین ٹی وی فلم کا ایوارڈ ملا۔

ورائٹی ٹاک سیریز کا ایوارڈ ایچ بی او کی سیریز ’لاسٹ ویک ٹو نائٹ ود جان اولیور‘ کو ملا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں